بی جے پی حکومت کا بڑبولاپن کورونا بحران کے بڑھنے کا سبب: اکھلیش

اکھلیش یادو نے منگل کو جاری بیان میں کہا کہ سماجوادی پارٹی بحران کے اس دور میں عوام کے ساتھ ہے، آگے بھی رہی گی۔ لیکن جہاں حکومت کی کمی ہوگی اسے اجاگر کرنا بھی پارٹی کا اخلاقی اور سماجی فرض ہے۔

اکھلیش یادو، تصویر یو این آئی
اکھلیش یادو، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

لکھنؤ: سماجوادی پارٹی (ایس پی) صدر اکھلیش یادو نے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) حکومت کا بڑبولاپن خود بڑھتے کورونا بحران کا سبب ہے۔ ریاست کے عوام علاج، دوا اور آکسیجن کے لئے در در بھٹک رہے ہیں، مگر بی جے پی حکومت غلط تشہیر اور اشتہاروں کے سہارے سبھی کو بھٹکانے کا کام کر رہی ہے۔

اکھلیش یادو نے منگل کو جاری بیان میں کہا کہ سماجوادی پارٹی بحران کے اس دور میں عوام کے ساتھ ہے، آگے بھی رہی گی۔ لیکن جہاں حکومت کی کمی ہوگی اسے اجاگر کرنا بھی پارٹی کا اخلاقی اور سماجی فرض ہے۔ جمہوریت میں اپوزیشن پارٹی کی آرتی اتارنے کے لئے نہیں ہے۔ بی جے پی نے چار سال میں عوام کے مفاد میں ایک بھی قابل ذکر ترقیاتی کام نہیں کیا ہے۔ سیفئی سے گورکھ پور تک میڈیکل کے شعبہ میں جو بھی کام ہوئے وہ سبھی سماجوادی حکومت کے دور اقتدار میں ہوئے۔

اکھلیش یادو نے کہا کہ بی جے پی حکومت نے میڈیکل خدمات پر توجہ نہ دے کر انہیں برباد کیا ہے۔ انفیکشن کے دوسرے حملے کے زیادہ خطرناک ہونے کی ماہرین کی وارننگ کے باوجود حالات سنبھالنے کی کوشش نہیں کی گئی۔ گورکھپور اور رائے بریلی میں ایمس سماجوادی حکومت کی ہی دین ہے۔ بی جے پی حکومت انہیں ٹھیک سے شروع بھی نہیں کرپائی۔ بھرتی نہ ہونے سے ڈاکٹروں میں اور پیرا میڈیکل اسٹاف کی بھاری کمی ہے۔ بی جے پی حکومت کو اپنی کرنی پر شرم نہیں آتی ہے۔

اکھلیش یادو نے کہا کہ انتخابی مہم چلانے والے وزیراعلیٰ کی کھوکھلی یقین دہانیوں سے تڑپ تڑپ کر ہو رہی اموات کو چھپایا نہیں جاسکتا۔ بیٹا آگرہ میں اپنے والد کو لے کر دوڑتا رہا، علاج نہیں ملا۔ کانپور میں، ڈیڑھ گھنٹہ تک وہ لاشیں کارٹ پر پڑی رہیں۔ گورکھپور میں سڑک پر مریض کی موت۔ کانپور کے ایک اسپتال میں آکسیجن ختم، 2 ہلاک، آگرہ کے ایک اسپتال میں، یہ کہا جارہا ہے کہ پہلے 5 سلینڈر لائیں تب ہی ہم آپ کو داخل کریں گے۔ وینٹی لیٹر، بھاپ مشینیں، آکسیجن سبھی بلیک مارکیٹ میں چل رہے ہیں۔ حکومت اس پر قابو پانے میں ناکام رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ریاست میں بحران اس لئے بھی ہے کہ وزیر اعلی کی ٹیم الیون بھی کسی کام کی ثابت نہیں ہو رہی ہے۔ اس کے سارے سسٹم بیکار ہوچکے ہیں۔ اسپتال اور گھر میں مریضوں کی کوئی دیکھ بھال نہیں ہے۔ اس طرح کے پریشان حال لوگوں کی زندگیوں کے ساتھ کھلواڑ کرنا غیرانسانی ہونے کی تمام حدیں پار کر گیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔