بہار: بی جے پی کے وزیر نے مانجھی کو پھٹکارا تو ’ہم‘ نے دی حمایت واپسی کی دھمکی، اب کیا کرے گی نتیش حکومت!

بہار کی نتیش حکومت میں بی جے پی کے وزیر نیرج کمار ببلو نے مانجھی کے تعلق سے کہہ دیا کہ ’’مجھے لگتا ہے ان پر عمر کا اثر ہو گیا ہے اس وجہ سے وہ ایسے بیان دے رہے ہیں‘‘، اس بیان سے ’ہم‘ بہت ناراض ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

بہار کی نتیش حکومت میں بی جے پی کے وزیر نیرج کمار ببلو نے پیر کے روز سابق وزیر اعلیٰ جیتن رام مانجھی کو سیاست سے سبکدوشی لے کر ’رام نام‘ جپنے کی صلاح دینے پر ہنگامہ بڑھ گیا ہے۔ مانجھی کی پارٹی ہندوستانی عوام مورچہ (ہم) نے اس طرح کے بیانات کے بعد بہار حکومت سے حمایت واپس لینے تک کی دھمکی دے ڈالی ہے۔

دراصل بہار حکومت میں بی جے پی کے وزیر نیرج کمار ببلو سے جب پیر کو صحافیوں نے مانجھی کے برہمنوں کے خلاف قابل اعتراض بیان کو لے کر سوال کیا تو انھوں نے اس بیان کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ مانجھی سینئر لیڈر ہیں، وزیر اعلیٰ نتیش کمار نے انھیں وزیر اعلیٰ جیسے عہدہ پر بٹھایا۔ اتنے باوقار جگہ تک وہ پہنچے، ایسی حالت میں اس طرح کا بیان دینا کہیں سے بھی مناسب نہیں ہے۔


وزیر نیرج کمار ببلو نے اس کے بعد یہاں تک کہہ دیا کہ ’’مجھے لگتا ہے کہ ان پر عمر کا اثر ہو گیا ہے۔ اس وجہ سے وہ ایسے بیانات دے رہے ہیں۔ ان کا بیٹا وزیر ہے، اس لیے اپنے بیٹے کے مستقبل کے لیے انھیں گھر بیٹھ جانا چاہیے۔ سیاست چھوڑ کر رام رام جپنا چاہیے۔‘‘

وزیر کے اس بیان پر ’ہم‘ نے جوابی حملہ کرنے میں تاخیر نہیں کی۔ ’ہم‘ ترجمان دانش رضوان نے وزیر کے بیان پر سخت اعتراض ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ نیرج ببلو کون ہوتے ہیں مانجھی جی کو صلاح دینے والے؟ انھوں نے کہا کہ ہم اپنی پارٹی کے چار اراکین اسمبلی کو ہٹا لیں تو این ڈی اے کو اوقات معلوم پڑ جائے گی۔ جو ابھی وزیر بنے بیٹھے ہیں سب سڑک پر رام نام جپنے لگیں گے۔ رضوان نے کہا کہ نیرج ببلو کو کچھ بولنے سے پہلے عمر کا خیال رکھنا چاہیے کہ وہ کس کے بارے میں کیا بول رہے ہیں؟

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔