بہار انتخابات: بی جے پی کا ووٹ شیئر 5 فیصد کم ہوا تو سیٹیں کیسے بڑھیں؟ اُدت راج نے ای وی ایم پر اٹھائے سوال

کانگریس لیڈر اُدت راج نے ایک ٹوئٹ میں سوال پوچھا ہے کہ بی جے پی کا بہار میں ووٹ شیئر 5 فیصد کم ہوا ہے تو سیٹیں کس طرح بڑھ گئیں؟ اس کے برعکس آر جے ڈی کا ووٹ شیئر 5 فیصد بڑھا ہے لیکن سیٹیں کم ہو گئیں۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

ونے کمار

بہار اسمبلی انتخاب میں مہاگٹھ کی شکست کے بعد ای وی ایم پر کئی لوگوں نے انگلی اٹھائی ہے۔ کانگریس لیڈر ادت راج نے ووٹ شماری کے دن بھی ای وی ایم کی کارکردگی کو لے کر خدشات ظاہر کیے تھے، اور آج بھی ایک ویڈیو ٹوئٹ کر کے بی جے پی کے ذریعہ 74 سیٹیں حاصل کرنے کو لے کر دھاندلی پر مبنی ٹھہرانے کی کوشش کی ہے۔ انھوں نے ٹوئٹ میں سوال کیا ہے کہ ’’بی جے پی کا بہا رمیں ووٹ شیئر 5 فیصد گرا ہے تو سیٹیں کیسے بڑھیں؟‘‘

ادت راج نے بہار اسمبلی انتخاب میں بی جے پی اور آر جے ڈی کے ذریعہ حاصل سیٹوں اور ووٹ شیئر کا موازنہ بھی کیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ ’’بی جے پی کا ووٹ شیئر بہا رمیں گرا ہے تو سیٹیں کیسے بڑھیں؟ آر جے ڈی کا ووٹ شیئر 5 فیصد بڑھا لیکن سیٹیں کم ہوئیں۔ بی جے پی کا ووٹ بینک کم ہے، زیادہ سے زیادہ 15 سیٹیں آنی تھیں۔ دیہی علاقے میں زیادہ این ڈی اے جیتی ہے جب کہ ان کا شہری بیس ہے۔ ای وی ایم میں سیٹنگ ہوئی۔‘‘

اس پورے معاملے میں بہار کے چیف الیکشن افسر ایچ آر شرینواس کا کہنا ہے کہ ووٹنگ کا عمل پوری طرح سے غیر جانبدار رہا، اس طرح کے الزامات بے بنیاد ہیں۔ انھوں نے کہا کہ کسی بھی امیدوار کے ذریعہ طلب کیے جانے پر ووٹ شماری سے متعلق دستاویز اور ویڈیو فوٹیج وغیرہ دستیاب کرا دیے جائیں گے۔

غور طلب ہے کہ بہار اسمبلی کی 243 سیٹوں پر ہوئے انتخاب میں این ڈی اے نے 125 سیٹیں حاصل کر اکثریت کے لیے ضروری نمبر پا لیا ہے۔ اپوزیشن پارٹیوں کے اتحاد مہاگٹھ بندھن کو اس انتخاب میں 110 سیٹیں حاصل ہوئی ہیں۔ انتخاب میں آر جے ڈی کو 75، بی جے پی کو 74، جنتا دل یو کو 43 اور کانگریس کو 19 سیٹیں حاصل ہوئی ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 13 Nov 2020, 2:40 PM
next