بنگال ضمنی انتخاب: ای وی ایم میں بند ہوئی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی کی قسمت

ممتا بنرجی بھوانی پور سیٹ پر جیت حاصل کر وزیر اعلیٰ کی کرسی پر برقرار رہنا چاہتی ہیں، ترنمول کانگریس سپریمو کا بی جے پی امیدوار پرینکا ٹبریوال اور سی پی ایم امیدوار شریجیب سے مقابلہ ہے۔

ممتا بنرجی، تصویر یو این آئی
ممتا بنرجی، تصویر یو این آئی
user

قومی آوازبیورو

مغربی بنگال میں آج کئی طرح کے الزامات اور چھوٹے موٹے واقعات کے درمیان بھوانی پور سمیت تین سیٹوں پر ضمنی انتخاب کے لیے ووٹنگ کا عمل مکمل ہو گیا۔ ووٹوں کی گنتی 3 اکتوبر کو ہوگی اور اسی دن نتیجے برآمد ہوں گے۔ اسی کے ساتھ وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی کی قسمت ای وی ایم میں قید ہو گئی ہے، جو بھوانی پور سے انتخاب لڑ رہی ہیں۔ بی جے پی ان کے خلاف پرینکا ٹبریوال کو میدان میں اتارا ہے۔

شام پانچ بجے تک بھوانی پور سیٹ پر تقریباً 53.32 فیصد ووٹنگ ہوئی۔ اس کے علاوہ آج مرشد آباد کے شمشیر گنج اور جنگی پور سیٹوں پر ہوئے ضمنی انتخاب میں بالترتیب 78.60 فیصد اور 76.12 فیصد ووٹنگ ہوئی۔ الیکشن کمیشن نے کہا کہ ووٹنگ کے تعلق سے اصل جانکاری جمعہ کو ملے گی۔ اپریل-مئی میں ہوئے بنگال اسمبلی انتخاب کے دوران دونوں جگہ ایک ایک امیدوار کی عین انتخاب سے قبل موت ہونے کے سبب ووٹنگ رد کرنی پڑی تھی۔


بھوانی پور سے بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی اس عہدہ پر بنے رہنے کے لیے الیکشن لڑ رہی ہیں، اس لیے یہ سیٹ ہائی پروفائل بن گئی ہے۔ بھوانی پور میں ترنمول کانگریس سپریمو اور وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی کا مقابلہ بی جے پی امیدوار پرینکا ٹبریوال اور سی پی ایم امیدوار شریجیب وشواس ہے۔

آج صبح جب ووٹنگ شروع ہوئی تو بھوانی پور سیٹ کے کچھ علاقوں سے بی جے پی اور ٹی ایم سی حامیوں کے درمیان ہاتھا پائی کی خبریں سامنے آنے لگیں۔ بی جے پی امیدوار پرینکا ٹبریوال نے الزام عائد کیا کہ ٹی ایم سی نے وارڈ نمبر 72 کے پولنگ بوتھ پر جبراً ووٹنگ رکوا دی۔ انھوں نے الزام لگایا کہ فرہاد حکیم اور سبرت مکھرجی اپنے حلقہ میں ووٹنگ کو متاثر کر رہے تھے۔ بی جے پی نے دونوں لیڈروں کے خلاف الیکشن کمیشن میں شکایت درج کرائی ہے۔ وہیں، ٹی ایم سی لیڈر فرہاد حکیم نے الزامات کو بے بنیاد بتایا۔


بھوانی پور میں ہی ایک بوتھ کے باہر ٹی ایم سی اور بی جے پی حامیوں کے درمیان معمولی ہاتھا پائی کی بھی خبر ہے۔ یہاں سیکورٹی فورسز نے حالات کو قابو میں کر لیا۔ ٹی ایم سی نے بھی الیکشن کمیشن میں شکایت درج کرائی ہے جس میں ٹبریوال پر 20 کاروں کے ساتھ گھومنے اور ووٹروں کو ڈرانے دھمکانے کا الزام عائد کیا۔ پرینکا نے اس الزام سے انکار کیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔