وائرس ہو یا سرحد، ملک ہر چیلنج سے نمٹنے کے قابل: وزیر اعظم مودی

نریندر مودی نے کہا کہ ہندوستان نے پچھلے سال میں یہ ظاہر کیا ہے کہ وائرس ہو یا سرحد کا چیلنج، ہندوستان خود کو بچانے کے لئے ہر اقدام کو کرنے کے قابل ہے۔

وزیر اعظم مودی / یو این آئی
وزیر اعظم مودی / یو این آئی
user

یو این آئی

نئی دہلی: وزیر اعظم نریندر مودی نے آج کہا ہے کہ ملک تیزی سے دنیا کے نقشے پر اپنا نشان چھوڑ رہا ہے اور وہ کسی بھی صورتحال سے نمٹنے کے لئے مکمل طور پر قابل ہے، چاہے وہ وائرس ہو یا سرحد پر کوئی چیلنج۔ پی ایم مودی نے جمعرات کے روز یہاں دہلی چھاؤنی کے کری اپپا پریڈ گراؤنڈ میں نیشنل کیڈٹ کور (این سی سی) کی ریلی کے بعد کیڈٹس سے خطاب کرتے ہوئے چین کے ساتھ مشرقی لداخ میں دس ماہ سے زیادہ عرصہ سے جاری فوجی تعطل کا بالواسطہ طور پر ذکر کیا اور کہا کہ ہندوستانی فوج نے چین کے ارادے کو ناکام کر دیا-

انہوں نے کہا کہ "ہندوستان نے پچھلے سال میں یہ ظاہر کیا ہے کہ وائرس ہو یا سرحد کا چیلنج، ہندوستان خود کو بچانے کے لئے ہر اقدام کو کرنے کے قابل ہے۔ چاہے وہ ویکسین کی حفاظتی جال ہو یا ہندوستان کے چیلینجرز کا جدید میزائل، ہندوستان ہر محاذ پر قادر ہے۔"

انہوں نے کہا کہ حکومت دنیا کی بہترین مسلح افواج بنانے کے لئے ہر قدم اٹھا رہی ہے اور ہماری افواج کے پاس عمدہ 'جنگی مشینیں' موجود ہیں۔ بدھ کے روز فرانس سے تین رافیل لڑاکا طیاروں کی ملک میں آنے والی تازہ کھیپ کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ان طیاروں میں آسمان میں پرواز کے دوران ایندھن بھرا گیا تھا اور ہمارے دوست ملک متحدہ عرب امارات، سعودی عرب اور یونان نے اس میں تعاون کیا تھا۔ اس سے دنیا میں ہندوستان کی بڑھتی ہوئی اہمیت کا پتہ چلتا ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ حکومت نے ملک کے اندر ہی افواج کی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے پہل کی ہے۔ ملکی تیجس لڑاکا طیارے کی مثال دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس کی دھمک آسمان سے سمندر تک سنائی دے رہی ہے اور اب 80 سے زیادہ تیجس طیارہ فضائیہ کو دیئے جائیں گے۔ جلد ہی ہندوستان دفاعی مصنوعات کی درآمد سے برآمد کرنے والے کے کردار میں نظر آئے گا۔

کورونا کے دور کو بھرپور چیلینج قرار دیتے ہوئے مودی نے کہا کہ اس نے اپنے ساتھ ملک کے لئے کچھ کرنے کا ایک موقع بھی لایا ہے، تاکہ اسے خود کفیل بنایا جاسکے۔ انہوں نے کہا، "ان تمام اہداف کے حصول میں نوجوانوں کی طاقت کا کردار اور نوجوانوں کی طاقت میں شراکت سب سے اہم ہے۔ آپ سب کے اندر مجھے ایک قومی خدمت گار اور قومی محافظ بھی نظر آتا ہے۔

انہوں نے ملک کی تعمیر میں این سی سی کو ایک اہم معاون قرار دیتے ہوئے کہا، "یہ سال ایک بطور کیڈٹ ایک ہندوستانی شہری کی حیثیت سے ایک نئی قرارداد لینے کا سال ہے۔ یہ ملک کے لئے وعدہ کرنے کا سال ہے، ملک کے لئے نئے خواب دیکھنے کا ایک سال ہے۔

این سی سی میں لڑکیوں کی بڑھتی شرکت کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پچھلے برسوں میں ان کے حصے میں 35 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔ فوج کے ہر محاذ کو لڑکیوں کے لئے کھولا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ ملک کی تمام لڑکیوں سے گزارش کرتے ہیں کہ وہ ان مواقع سے فائدہ اٹھائیں۔ ملک کو آپ کی بہادری کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا، "ہندوستان کی بہادر بیٹیاں اب بھی دشمن کا مقابلہ کرنے کے لئے ہر محاذ پر کھڑی ہیں۔ ملک کو آپ کی ہمت کی ضرورت ہے اور ایک نئی بلندی آپ کا منتظر ہے۔ میں آپ میں مستقبل کے افسر دیکھتا ہوں۔ "

وزیر اعظم نے کہا کہ این سی سی کے سرحدی علاقوں اور ساحلی علاقوں میں این سی سی کے کردار اور ذمہ داری میں مسلسل اضافہ کیا جا رہا ہے۔ حکومت نے این سی سی ٹریننگ کے لئے فائرنگ کرنے والے سمیلیٹروں کی تعداد ایک سے بڑھا کر 98 کردی ہے۔ مائکرولائٹ فلائی سمیلیٹروں کی تعداد بھی پانچ سے بڑھا کر 44 کردی گئی ہے اور روونگ سمیلیٹروں کی تعداد 11 سے بڑھا کر 60 کردی گئی ہے۔ اس سے تربیت کے معیار میں بہتری آئے گی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next