اتر پردیش میں آبادی کنٹرول کے بہانے غریبوں کے خلاف سازش کی کوکشش: سنجے سنگھ

سنجے سنگھ نے کہا کہ حکومت میں ہمت ہے تو سب سے پلے 2 سے زیادہ بچے والے لیڈروں کو ٹکٹ دینے پر روک لگائے۔ ان کا دعوی ہے کہ اس فیصلے سے بی جے پی کے سارے اراکین اسمبلی و اراکین پارلیمنٹ کے ٹکٹ کٹ جائیں گے۔

سنجے سنگھ، تصویر یو این آئی
سنجے سنگھ، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

ہردوئی: عام آدمی پارٹی (عآپ) کے راجیہ سبھا رکن سنجے سنگھ نے الزام لگایا کہ آبادی کنٹرول کے بہانے اترپردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ حکومت غریب عوام کو سرکاری اسکیم کے استفادے سے محروم کرنے کی سازش کر رہی ہے۔ سنجے سنگھ نے ہفتہ کو یہاں میڈیا نمائندوں سے کہا کہ آبادی کنٹرول کے نام پر یوگی آدتیہ ناتھ اسکیمات کو روکنے کی بات کررہے ہیں۔ وہ اس ریاست کے غریب لوگوں کو رسوا کر رہے ہیں۔ مان لیجئے کہ جس کے دو سے زیادہ بچے ہیں وہ دلت یا پسماندہ سماج سے ہیں اور اس کی آمدنی نہیں، تو حکومت دو بچوں کے بندش لگانے کے نام پر اس کی ساری سرکاری اسکیمات بند کردے گی۔

سنجے سنگھ نے کہا کہ حکومت میں اگر ہمت ہے تو سب سے پلے دو سے زیادہ بچے والے لیڈروں کو ٹکٹ دینے پر روک لگائے۔ ان کا دعوی ہے کہ اس فیصلے سے بی جے پی کے سارے اراکین اسمبلی و اراکین پارلیمنٹ کے ٹکٹ کٹ جائیں گے۔ یہ حال میونسپل کارپوریشن اور گرام پنچایت اراکین کا بھی ہوگا۔


یوپی جوڑو مہم کے تحت ہردوئی ضلع میں دفتر کا افتتاح کرنے کے بعد سنجے سنگھ نے کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی رکن پارلیمان ساکشی مہاراج کہتے ہیں کہ پانچ بچے پیدا کرو، سنگھ والے کہتے ہیں کہ 10 بچے پیدا کرو، سنگھ سربراہ موہن بھاگوت ہندوؤں کو زیادہ بچے پیدا کرنے کی نصیحت دیتے ہیں۔ یوگی آدتیہ ناتھ کو سنگھ سے ٹکراؤ کی فکر کرنی چاہیے کہ آبادی کنٹرول کے غلط نتائج ان کے لئے کیا ہوں گے۔

عآپ لیڈر نے پنچایت انتخاب خاص کر ضلع پنچایت صدر اور بلاک پرمکھ انتخاب کا مذاق اڑانے کا بی جے پی پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ ان دونوں انتخاب کو منسوخ کرنے کا فیصلہ الیکشن کمیشن کو کرنا چاہیے اور یہ انتخاب اسمبلی انتخاب کی طرز پر عام شہریوں کے ووٹوں سے ہونے چاہیے۔


آئندہ سال ہونے والے یوپی اسمبلی انتخابات کے سلسلے میں انہوں نے کہا کہ فی الحال ان کی پارٹی کا کسی دیگر پارٹی کے ساتھ مل کر الیکشن لڑنے کا فیصلہ نہیں ہوا ہے۔ حالانکہ یوپی میں 403 اسمبلی حلقے ہیں۔ کوئی چھوٹی ریاستی نہیں ہے۔ سہیل دیو بھارتیہ سماج پارٹی صدر اوم پرکاش راج بھر اور سماج وادی پارٹی سربراہ اکھلیش یادو سے ہوئی ملاقات رسمی تھی ایسا سیاست میں ہوتا رہتا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔