ارنب گوسوامی کو جلد سے جلد گرفتار کیا جائے: کانگریس

وزیرداخلہ انیل دیشمکھ نے کہا کہ اس چیٹ میں بہت سارے معاملات اٹھائے گئے ہیں۔ حقیقت یہ ہے کہ عدلیہ کو اپنے مفادات کے لیے خریدا جاسکتا ہے جو اس چیٹ سے ظاہر ہوتا ہے اور جو انتہائی سنگین ہے۔

ارنب گوسوامی، تصویر آئی اے این ایس
ارنب گوسوامی، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

ممبئی: ممبئی پولیس کی تحقیقات میں ری پبلک ٹی وی کے ایڈیٹر ارنب گوسوامی اور بی اے آر سی کے عہدیدار پرتھوداس گپتا کے درمیان واٹس ایپ چیٹ میں کئی سنگین باتیں اجاگر ہوئی ہیں۔ 510 صفحات پر مشتمل اس چیٹ میں ججوں کو خریدنے کی بات کی گئی ہے جو انتہائی سنگین ہے۔ اس سے عدلیہ کی آزادی کو داغدار کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔ ارنب گوسوامی کو جلد ازجلد گرفتار کیا جائے اور عوام کے سامنے اصل حقیقت واپس لایا جائے- یہ مطالبہ مہاراشٹر پردیش کانگریس کمیٹی نے کیا ہے۔

پارٹی کے ترجمان اتل لونڈھے نے اس تعلق سے وزیر داخلہ انیل دشمکھ سے ملاقات کی اور میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اداکار سوشانت سنگھ راجپوت کے معاملے کو پٹنہ سے ممبئی منتقل کرنے کے ریا چکرواتی کی درخواست کو سپریم کورٹ میں قبول نہیں کیا گیا۔ اس سے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ اس کے پیچھے ارنب گوسوامی ہی تھا جو اس کے چیٹ سے بھی ظاہر ہوتا ہے۔ اس کے علاوہ ٹی آر پی معاملے میں تجربہ کار وسینئر وکیل عدالت میں ہمارا موقف پیش کریں گے اور اس میں یہ مشورہ دیا گیا ہے کہ آپ ججوں کو خریدیں۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ عدالت میں دخل اندازی کرتے ہوئے ججوں کو خریدنے کی کوشش کی گئی ہے۔ اس سے چیف جسٹس کے کردار پر بھی سوالیہ نشان لگ جاتا ہے اور عدلیہ کے تقدس اور آزادی پر بھی۔

اس موقع پر وزیرداخلہ انیل دیشمکھ نے کہا کہ اس چیٹ میں بہت سارے معاملات اٹھائے گئے ہیں۔ حقیقت یہ ہے کہ عدلیہ کو اپنے مفادات کے لیے خریدا جاسکتا ہے جو اس چیٹ سے ظاہر ہوتا ہے اور جو انتہائی سنگین ہے۔ عدلیہ پر لوگوں کا اعتماد ہے ایسے میں ججوں کو خریدنے کا مشورہ دینا انتہائی سنگین معاملہ ہے۔ اس پورے معاملے کی تفتیش جا ری ہے اور بہت جلد اس پر کارروائی کی جائے گی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔