آندھرا پردیش: مرنے کے بعد پھر زندہ ہونے کی امید میں ماں نے دو جوان بیٹیوں کا کیا قتل

یہ اندوہناک واقعہ چتور ضلع کے مدن پلی میں پیش آیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ والدین جو کافی پوجاپاٹ کیا کرتے تھے نے پوجا کے نام پر بیٹیوں کا قتل کیا ہے۔

علامتی، تصویر آئی اے این ایس
علامتی، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

حیدرآباد: آندھراپردیش میں دل دہلانے والے واقعہ میں ایک تعلیم یافتہ ماں نے اپنی جوان بیٹیوں کا اس امید پر قتل کردیا کہ روحانی طاقتوں کی وجہ سے وہ پھر زندہ ہوجائیں گی، کیونکہ کل یُگ کا خاتمہ ہوگا اور ستیہ یُگ شروع ہو جائے گا۔ پولیس نے کہا کہ یہ خاندان کچھ عرصہ سے جادو ٹونا کر رہا تھا۔

مدن پلی کے ڈی ایس پی روی نے کہا کہ ان میں سے ایک بیٹی کا قتل کرنے سے پہلے اس کا سرمونڈھ دیا گیا۔ جب یہ خاتون اپنی بیٹی کا قتل کر رہی تھی تو اس کا شوہر خاموش تماشائی بنا ہوا تھا۔ پولیس ذرائع نے کہا کہ اگرچہ یہ جوڑا خود کی بھی جان لینا چاہتا تھا تاکہ یہ ثابت ہوسکے کہ پولیس کے وہاں آنے پر وہ زندہ ہوجائیں گے۔ تفصیلات کے مطابق یہ واقعہ چتور ضلع کے مدن پلی میں پیش آیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ والدین جو کافی پوجا پاٹ کیا کرتے تھے نے پوجا کے نام پر بیٹیوں کا قتل کیا ہے۔

پولیس اور مقامی لوگوں کے مطابق، پوریشوتم نائیڈو اور پدماجہ کچھ عرصے سے مدن پلی کے سیون نگر میں مقیم ہیں۔ پوریشوتم نائیڈو ویمن ڈگری کالج کا وائس پرنسپل ہے اور اس کی اہلیہ پدمجا پرائیویٹ تعلیمی ادارے کی پرنسپل ہے۔ ان کی بیٹیاں الیکھیا (27) اور سائی دیویا (22) ہیں۔ یہ جوڑا گھر میں طرح طرح کی پوجا کرتا تھا۔

اسی دوران، اتوار کے روز گھر میں پوجا کی گئی اور اس دوران پدمجا نے پہلے سائی دیویا اور پھر الیکھیا کو ورزش کے ڈمبل سے مار کر قتل کر دیا۔ مقامی لوگوں نے مکان سے آنے والے شور کو سن کر پولیس کو اطلاع دی۔ ڈی ایس پی روی منوہرچاری پولیس اہلکاروں کے ساتھ پہنچے جنہوں نے لاشوں کا معائنہ کیا اور کہا کہ پوجا کے دوران ان دونوں کا قتل کیا گیا ہے۔ مزید جانچ کے بعد حقائق سامنے آئیں گے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next