ورما کو استھانا کے کہنے پر ہٹایا گیا: کانگریس

ابھیشیک منو سنگھوی نے کہا، ’’کانگریس پارٹی کا موقف ہے کہ جانچ ایجنسی کے ڈائریکٹر کو منتخب کرنے والی کمیٹی کو آلوک ورما کو عہدے سے ہٹانے سے پہلے اپنی بات رکھنے کا موقع دینا چاہئے تھا۔‘‘

یو این آئی

نئی دہلی: کانگریس نے آج مودی حکومت پر الزام عائد کیاکہ اس نے رافیل طیارہ سودے کی جانچ روکنے کے لئے مرکزی ویجلنس کمیشن کا غلط استعمال کیا اور مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کے ڈائریکٹر آلوک ورما کو ان کے عہدے سے ہٹادیا۔ پارٹی کا کہنا ہے کہ جانچ ایجنسی کے ڈائریکٹر کو منتخب کرنے والی کمیٹی کو آلوک ورما کو عہدے سے ہٹانے سے پہلے اپنی بات رکھنے کا موقع دینا چاہئے تھا۔

کانگریس کے ترجمان ابھیشیک منو سندھوي نے یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ سلیکشن کمیٹی نے آلوک ورما کو جانچ ایجنسی کے افسر راکیش استھانہ کے الزامات پر ہٹایا ہے ۔ یہ المیہ ہے کہ دہلی ہائی کورٹ نے راکیش استھانہ کی ان کے خلاف درج ایف آئی آر کو منسوخ کرنے کی درخواست کو مسترد کر دیا ہے اور حکومت نے راکیش استھانہ کے الزامات پر آلوک ورما کو عہدے سے ہٹا دیا۔

پارٹی نے دہلی ہائی کورٹ کے اس فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے جس میں رایک استھانہ کے خلاف رشوت کے الزامات کی جانچ جاری رکھنے کومنظوری دے دی گئی ہے۔

ابھیشیک منو سنگھوی نے کہا کہ یہ بھی دلچسپ ہے کہ آلوک ورما کو سی وی سی رپورٹ کی بنیاد پر ہٹایا گیا لیکن سی وی سی نہ تو سی بی آئی ڈائریکٹر کی تقرری کرتی ہے اور نہ ہی اسے ہٹا سکتی ہے۔ حکومت نے سی وی سی کے عہدے کا غلط استعمال کیا ہے۔ ترجمان نےمزید کہا کہ حکومت نے یہ سب رافیل سودے کی جانچ سے بچنے کے لئے کیا ہے۔