اکھلیش یادو کی 'سماجوادی وجے رتھ یاترا' 12 اکتوبر سے

اکھلیش یادو نے کہا کہ لکھیم پور تشدد واقعہ نے واضح کیا ہے کہ سرکاری مشنری کے بیجا استعمال سے آئین کو کیسے روندا جا رہا ہے۔ ہر کوئی دیکھ رہا ہے کہ مجرمین اب تک پکڑے نہیں جاسکے ہیں۔

تصویر بشکریہ ٹوئٹر/ @qazifarazahmad
تصویر بشکریہ ٹوئٹر/ @qazifarazahmad
user

یو این آئی

لکھنؤ: اتر پردیش اسمبلی انتخاب میں سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے حق میں ماحول بنانے کے لئے 'سماج وادی وجے یاترا '12 اکتوبر سے کانپور سے شروع ہوگی۔ پارٹی صدر اکھلیش یادو نے ہفتہ کو میڈیا نمائندوں کو بتایا کہ ریاست کے عوام کو بی جے پی کے جنگل راج سے نجات دلانے کے لئے ان کی پارٹی کمر بستہ ہے اور اسی کے تحت سماج وادی وجے یاترا کا آغاز 12 اکتوبر کو کیا جائے گا۔ یہ یاترا اسمبلی انتخابات تک جاری رہے گی۔

انہوں نے کہا کہ 'لکھیم پور تشدد واقعہ نے واضح کیا ہے کہ سرکاری مشنری کے بیجا استعمال سے آئین کو کیسے روندا جا رہا ہے۔ ہر کوئی دیکھ رہا ہے کہ مجرمین اب تک پکڑے نہیں جاسکے ہیں۔ لکھیم پور اور بہرائچ کے کسان جیپ سے کچل دیئے گئے۔ ان کے اہل خانہ کا مطالبہ ہے کہ خاطیوں کو جلد سے جلد سزا ملے۔


انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کے میعاد کار میں امن اور ہم آہنگی قائم نہیں ہوسکتی۔ ریاست میں چہار جانب خوف کا ماحول ہے۔ تاجر، خواتین اور کسان کوئی بھی محفوظ نہیں ہے۔ مہوبہ میں کاروبار کے قاتل آئی پی ایس کو ابھی تک پولیس گرفتار نہیں کرسکی ہے۔ کانپور کے کاروباری کے قتل کے ملزم چھ پولیس ہلکار ابھی تک فرار ہیں۔

اکھلیش یادو 12اکتوبر سے اس تاترا میں شامل ہوں گے۔ میڈیا کے سامنے پیش کی گئی بس میں نعرہ لکھا ہے' نئے ایس پی ہے نئی ہے ہوا'۔ بس میں پارٹی فاونڈر ملائم سنگھ یادو، اعظم خان، پروفیسر رام گوپال یادو اور نریش اتم پٹیل کے ساتھ ایس پی سربراہ اکھلیش یادو کی فوٹو لگائی گئی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔