بنگال حکومت اور گورنر کے درمیان ’ٹوئٹر جنگ‘ کے بعد اب ’قانونی جنگ‘ شروع

مغربی بنگال محکمہ اعلی تعلیم نے کہا ہے کہ گورنر نے بردوان یونیورسٹی کے وائس چانسلر کی تقرری میں قانون کی پاسداری نہیں کی۔ اسی لئے گورنر کے دستخط کردہ تقرری نامہ کو عملی طور پر منسوخ کردیا گیا ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

کولکاتا: گورنر اور مغربی بنگال حکومت کے درمیان ٹوئٹر جنگ کے بعد اب اختیارات کو لے کر دونوں کے درمیان قانونی جنگ شروع ہوگئی ہے۔ بردوان یونیورسٹی کے وائس چانسلر کی تقرری کو لے کر دونوں کے درمیان تنازع شروع ہوگیا ہے۔ ایک دن قبل گورنر نے اپنے طور پر بردوان یونیورسٹی کے وائس چانسلر کی تقرری کا اعلان کردیا تھا مگر آج محکمہ تعلیم نے ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ چوں کہ گورنر نے ریاستی حکومت کے صلاح و مشورہ کے بغیر وائس چانسلر کی تقرری کا اعلان کیا ہے۔ اس لئے اس فیصلے کو رد کیا جاتا ہے۔

مغربی بنگال محکمہ اعلی تعلیم نے کہا ہے کہ گورنر نے بردوان یونیورسٹی کے وائس چانسلر کی تقرری میں قانون کی پاسداری نہیں کی۔ اسی لئے گورنر کے دستخط کردہ تقرری نامہ کو عملی طور پر منسوخ کردیا گیا ہے۔ پیر کے سہ پہر کو گورنر نے محکمہ زیولوجی کے پروفیسر گوتم چندر کو بردوان یونیورسٹی کا وائس چانسلر مقرر کرنے کا نوٹی فیکشن جاری کرتے ہوئے تقرری کی فائل محکمہ اعلی تعلیم کو ارسال کردی تھی۔ اس کے بعد سے یہ بحث شروع ہوگئی تھی کہ ریاستی یونیورسٹیوں کے وائس چانسلر کی تقرری گورنر نے وزیر تعلیم سے مشورہ کیے بغیر یک طرفہ کیسے کرسکتے ہیں۔ اس کے بعد محکمہ اعلیٰ تعلیم نے جوابی کارروائی کرتے ہوئے گورنر کی تقرری منسوخ کرنے کا نوٹی فیکشن جاری کردیا اور کلیانی یونیورسٹی کے شعبہ زیولوجی کے پروفیسر اشیش کمار پانیگر کو بردوان یونیورسٹی کا وائس چانسلر مقرر کرنے کا اعلان کردیا گیا۔


محکمہ اعلی تعلیم نے اپنے بیان مں کہا ہے کہ ’وائس چانسلر کا عہدہ 21 فروری سے خالی ہے۔ کورونا بحران کے دور میں بھی محکمہ تعلیم نے ایک وائس چانسلر کی تقرری کیلئے پینل کے نام کو گورنر کے پاس بھیجا گیا تھا۔ گورنرنے وائس چانسلر کی تقرری سے متعلق قانون کو سمجھے بغیر اپنی پسند کے دو نام تجویز کرکے پیش کردیئے۔ جب کہ گورنر ریاستی یونیورسٹیوں کے چانسلر کی حیثیت سے محکمہ تعلیم کی سفارشات پر نوٹی فیکشن جاری کرنے کا حق رکھتے ہیں۔ وائس چانسلرز کی تقرری سے متعلق قانون کے مطابق یونیورسٹیوں کے وائس چانسلرز کی تقرری ریاستی وزیر تعلیم کے مشورے سے کی جائے گی۔گورنر نے اس کی تعمیل نہیں کی ہے لہذا یونیورسٹی کی دفعہ 57 کے تحت گورنر کے ذریعہ وائس چانسلر کی تقرری منسوخ کی جارہی ہے۔

محکمہ تعلیم نے کہا کہ کلیانی یونیورسٹی کے شعبہ زیولوجی کے پروفیسر اشیش کمار پانیگر کو چار سال کے لئے بردوان یونیورسٹی کا وائس چانسلر مقرر کیا گیا ہے۔ ایک دن میں دو وائس چانسلروں کی تقرری کے نوٹی فیکشن جاری کیے جانے سے عجیب و غریب صورت حال پیدا ہوگئی ہے۔ تاہم راج بھون نے پیر کی شب محکمہ اعلی تعلیم کے ذریعہ ہدایات جاری کیے جانے کے بعد ابھی تک اس سلسلے میں کوئی بیان یا رہنما اصول جاری نہیں کیے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔