مسلم مریضوں کو دہشت گرد کہنے والی ڈاکٹر آرتی کو گرفتار کیا جائے: دانش علی

بی ایس پی لیڈر دانش علی کا کہنا ہے کہ ”ڈاکٹر کا پیشہ ہمیشہ موقر رہا ہے۔ کورونا وبا کے وقت ڈاکٹر ہی حقیقی ہیرو ہیں لیکن کانپور میڈیکل کالج کی ڈاکٹر آرتی لال چندانی اس پیشے پر دھبہ ہیں۔“

دانش علی
دانش علی
user

یو این آئی

نئی دہلی: بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کے رہنما اور رکن پارلیمنٹ کنور دانش علی نے کورونا بحران کے اس دور میں ڈاکٹروں کے کام کی ستائش کرتے ہوئے سماج میں نفرت پھیلانے والی ملزمہ کانپور میڈیکل کالج کی ڈاکٹر آرتی لال چندانی کو گرفتار کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

دانش علی نے اس سلسلے میں ایک ٹوئٹ کیا ہے جس میں کہا ہے کہ "ڈاکٹر کا پیشہ ہمیشہ موقر رہا ہے۔ کورونا وبا کے وقت ڈاکٹر ہی حقیقی ہیرو ہیں لیکن کانپور میڈیکل کالج کی ڈاکٹر آرتی لال چندانی اس پیشے پر دھبہ ہیں۔" انہوں نے مزید کہا کہ مریضوں کو دہشت گرد کہہ کر نفرت پھیلانے والی اس ڈاکٹر کو ضرور گرفتار کیا جانا چاہیے۔ انہوں نے اترپردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ اور ریاست کے پولس ڈئریکٹر جنرل سے انھیں گرفتار کرنے کا مطالبہ بھی کیا ہے۔

غورطلب ہے کہ ڈاکٹر آرتی کی ایک ویڈیو وائرل ہو رہی ہے جس میں وہ ایک مخصوص طبقے کے افراد کے بارے میں کہتی ہیں کہ "کہنا نہیں چاہیے، لیکن یہ دہشت گرد ہیں اور ان کو ہم وی آئی پی ٹریٹمنٹ دے رہے ہیں۔ اپنے وسائل کو بے کار کر رہے ہیں۔ اپنے ڈاکٹروں کو بیمار کر رہے ہیں۔ ان کے لیے ہم 100 پی پی ای کٹ خراب کر رہے ہیں جبکہ ایک کٹ پر حکومت دو ہزار سے ڈھائی ہزار روپیے خرچ کر رہی ہے۔" اس ویڈیو میں ڈاکٹر آرتی کچھ صحافیوں سے غیر رسمی بات چیت کر رہی ہیں۔ اس میں ان کا براہ راست اشارہ تبلیغی جماعت سے منسلک افراد کی طرف تھا۔ اس معاملے میں کئی مسلم تنظیموں نے ڈاکٹر آرتی کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

Published: 2 Jun 2020, 4:11 PM