سال 2021: خواتین کے خلاف جرائم میں 30 فیصد کا اضافہ، نصف سے زیادہ کا تعلق یوپی سے

قومی کمیشن برائے خواتین کے مطابق 2021 میں یوپی سے خواتین کے خلاف جرائم کی زیادہ شکایتیں سامنے آئی ہیں، سب سے زیادہ آبادی والی اس ریاست میں خواتین سے متعلق جرائم کے 15828 معاملے سامنے آئے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

سال 2021 میں کورونا کے قہر اور طویل پابندیوں کے باوجود خواتین کے خلاف پہلے کے مقابلے بہت زیادہ جرائم کے معاملے سامنے آئے۔ قومی کمیشن برائے خواتین نے بتایا کہ 2021 میں خواتین کے خلاف جرائم کی شکایتوں میں 30 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔ کمیشن نے کہا کہ پورے سال میں اسے تقریباً 31 ہزار مجرمانہ شکایتیں ملیں۔ ان میں سے بیشتر کا تعلق اتر پردیش سے ہے۔

ہندوستانی پارلیمنٹ کے ذریعہ تشکیل آئینی ادارہ قومی کمیشن برائے خواتین نے بتایا کہ اسے 2021 میں خواتین کے خلاف ہوئے جرائم کی تقریباً 31 ہزار شکایتیں ملیں، جو کہ سال 2014 کے بعد سب سے زیادہ ہیں۔ اس کے علاوہ ان شکایتوں میں نصف سے زیادہ اتر پردیش سے ہیں۔ قومی کمیشن برائے خواتین کے مطابق 2020 کے مقابلے میں سال 2021 میں خواتین کے خلاف جرائم کی شکایتوں میں 30 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔


کمیشن کے سرکاری اعداد و شمار میں بتایا گیا ہے کہ 30864 شکایتوں میں سے گھریلو تشدد اور جہیز کے لیے استحصال کے 10 ہزار سے زیادہ معاملے، پھر 11013 معاملے خواتین کے جذباتی استحصال کو دھیان میں رکھتے ہوئے وقار کے ساتھ جینے کے حق سے متعلق تھے۔ اس کے ساتھ ہی گھریلو تشدد سے متعلق 6633 اور جہیز کے لیے استحصال سے متعلق 4589 شکایتیں تھیں۔ کمیشن کے مطابق اتر پردیش سے خواتین کے خلاف جرائم کی سب سے زیادہ شکایتیں موصول ہوئیں۔ سب سے زیادہ آبادی والی اس ریاست سے خواتین کے خلاف جرائم کے 15828 شکایتیں درج کی گئیں۔ علاوہ ازیں ملک کی راجدھانی دہلی میں 3336، مہاراشٹر میں 1504، ہریانہ میں 1460 اور بہار میں 1456 شکایتیں گزشتہ سال میں درج ہوئیں۔

کمیشن کے مطابق وقار کے ساتھ جینے کے حق اور گھریلو تشدد سے جڑی سب سے زیادہ شکایتیں اتر پردیش سے موصول ہوئی ہیں۔ 2021 میں این ایس ڈبلیو (قومی کمیشن برائے خواتین) کو گزشتہ 6 سالوں میں سب سے زیادہ شکایتیں موصول ہوئی ہیں۔ 2014 میں 33906 شکایتیں ملی تھیں۔ حالانکہ این ایس ڈبلیو کی سربراہ ریکھا شرما نے کئی مواقع پر یہ بھی کہا کہ شکایتوں میں اضافہ اس لیے ہوا ہے کیونکہ کمیشن لوگوں کو اپنے کام کے بارے میں زیادہ بیدار کر رہا ہے۔ این ایس ڈبلیو نے کہا کہ سال 2021 میں جولائی سے ستمبر تک ہر ماہ 3100 سے زیادہ شکایتیں موصول ہوئیں، آخری بار 3000 سے زیادہ شکایتیں اس وقت موصول ہوئی تھیں جب نومبر 2018 میں ’می ٹو‘ مہم اپنے عروج پر تھی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔