وارانسی: بی ایچ یو اسپتال میں داخل کورونا پازیٹو 21 سالہ نوجوان نے کی خودکشی

متوفی کے اہل خانہ نے اسپتال پر لاپروائی کا الزام لگاتے ہوئے اس کے لئے خاطی افسران کے خلاف قانونی کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ وارڈ میں داخل مریض کے بارے میں استپال انتظامیہ لاپروا تھے۔

خودکشی (علامتی تصویر)
خودکشی (علامتی تصویر)
user

یو این آئی

وارانسی: اترپردیش کے ضلع وارانسی کے بنارس ہندو یونیورسٹی (بی ایچ یو) کے صدر سندرلال اسپتال میں زیر علاج کورونا متاثر شخص نے چوتھی منزل سے کود کر خودکشی کرلی۔ پولیس ذرائع نے پیر کو یہاں بتایا کہ دماغی طور پر پریشان 21 سالہ انکت پاٹھک نے اتوار کی دیر رات اسپتال کی چوتھی منزل سے اچانک چھلانگ لگا دی۔ حادثے کے فوراً بعد اسے یہاں کے ٹراما سنٹر میں داخل کرایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دے دیا۔

انہوں نے کہا کہ ضلع کے پھول پور علاقے کے کیتھولی گاؤں باشندہ انکت اپنے کنبے میں اکلوتا بیٹا تھا دماغی طور پر کچھ پریشان ہونے کے بعد تقریباً یک ہفتے پہلے بی ایچ یو کے اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔ اتوار کوہی اس کی کورونا وائرس کی جانچ کی گئی تھی اور اس کی رپورٹ پازیٹو آئی تھی۔ کورونا متاثر ہونے کی وجہ سے کووڈ وارڈ میں داخل کرایا گیا۔

متوفی کے اہل خانہ نے اسپتال پر لاپرواہی برتنے کا الزام لگاتے ہوئے اس کے لئے خاطی افسران کے خلاف قانونی کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ وارڈ میں داخل مریض کے بارے میں استپال انتظامیہ لاپرواہ تھے۔ اسی وجہ سے یہ حادثہ پیش آیا۔

next