نوئیڈا میں مچھر مارنے کی دوا کے چھڑکاؤ سے 16 خاتون ملازمین بیہوش، اسپتال میں کرنا پڑا داخل

اتوار کی شب کمپنی میں کام چل رہا تھا جب مینجمنٹ نے مچھر مارنے کی دوا کا چھڑکاؤ کروا دیا، چھڑکاؤ کافی تیز تھا جس کی وجہ سے تھوڑی دیر بعد کمپنی میں کام کر رہی خواتین کی حالت بگڑنی شروع ہو گئی۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

دہلی سے ملحق اتر پردیش کے گریٹر نوئیڈا کے تھانہ ایکوٹیک 3 کے انڈسٹریل علاقہ واقع الیکٹرانک پارٹس بنانے والی ایک کمپنی میں مچھر مارنے کی دوا کے چھڑکاؤ سے 16 خاتون ملازمین بیہوش ہو گئیں۔ سبھی خواتین کو قریب کے ایک پرائیویٹ اسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔ فی الحال سبھی خاتون ملازمین کی طبیعت ٹھیک بتائی جا رہی ہے۔

اس واقعہ کی جانکاری ملنے کے بعد وہاں پہنچے خواتین کے اہل خانہ نے ہنگامہ کیا اور کمپنی مینجمنٹ پر سنگین لاپروائی کے الزامات لگائے۔ لوگوں کے ہنگامہ کے سبب کمپنی کے باہر کافی دیر تک بھیڑ بھاڑ والا ماحول بنا رہا۔ حالات کو دیکھتے ہوئے موقع پر پولیس پہنچی اور شکایت ملنے پر کارروائی کی بات کہہ کر سبھی لوگوں کو گھر واپس لوٹایا۔


موصولہ اطلاعات کے مطابق کمپنی میں اتوار کی شب کام چل رہا تھا جب مینجمنٹ نے مچھر مارنے والی دوا کا چھڑکاؤ کروا دیا۔ دوا کا چھڑکاؤ کافی تیز سطح پر کیا گیا تھا جس کی وجہ سے تھوڑی دیر بعد ہی کمپنی میں کام کر رہی خواتین کی حالت بگڑنی شروع ہو گئی۔

دوا کے اثر سے کمپنی میں کام کر رہی 16 خاتون ملازمین بیہوش ہو گئیں۔ اس کے بعد کمپنی میں افراتفری کا ماحول پیدا ہو گیا۔ مینجمنٹ نے دیگر ملازمین کی مدد سے بیہوش ہوئیں خواتین کو قریب کے ہی ایک پرائیویٹ اسپتال میں داخل کرایا۔ بتایا جا رہا ہے کہ سبھی خاتون ملازمین کی طبیعت فی الحال ٹھیک ہے۔ لیکن خواتین کے گھر والوں کے ذریعہ دی گئی شکایت کی بنیاد پر پولیس کارروائی کرنے کی بات کہہ رہی ہے۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔