کشمیر کے طلبا کی اردو کتابوں میں گہری دلچسپی: ڈاکٹر عقیل

قومی اردو کونسل کے ڈائریکٹر نے بتایا کہ اردو کتاب میلے کی کامیابی کا سہرا مقامی لوگوں، طلباء اور کشمیر یونیورسٹی کے عملے کو جاتا ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

سری نگر: قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان کے ڈائریکٹر ڈاکٹر شیخ عقیل احمد نے کہا کہ اہلیان کشمیر بالخصوص طلبا اردو کتابوں میں گہری دلچسپی رکھتے ہیں اور یہ دلچسپی برقرار رہی تو کشمیر مستقبل میں اردو کا مرکز بن سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ قومی اردو کونسل کشمیر یونیورسٹی میں اردو کتابوں کا ایک مستقل اسٹال قائم کرنے کی کوشش کرے گا اور وہ اس سلسلے میں یونیورسٹی ھٰذا کے وائس چانسلر پروفیسر طلعت احمد سے بات کریں گے۔

کشمیر کے طلبا کی اردو کتابوں میں گہری دلچسپی: ڈاکٹر عقیل

ڈاکٹر عقیل احمد نے کشمیر یونیورسٹی کے وسیع و عریض کیمپس میں 15 جون کو شروع ہوکر اتوار کو اختتام پذیر ہوںے والے 23 ویں کل ہند اردو کتاب میلے کے حاشیے پر یو این آئی اردو کو بتایا، 'ہمارا یہاں اردو کتاب میلہ منعقد کرنے کا فیصلہ بہت صحیح ثابت ہوا۔ عوامی ردعمل انتہائی تشفی بخش رہے۔ میلے میں شرکت کرنے والے ناشرین کی جو امید تھی اس سے کہیں زیادہ کتابیں بک چکی ہیں۔ یہاں کے لوگوں بالخصوص طلباء نے اردو کتاب میلے میں کافی دلچسپی دکھائی۔ میرا ماننا ہے کہ اگر یہ دلچسپی یوں ہی برقرار رہی تو آنے والے وقت میں کشمیر اردو کا مرکز ہوگا'۔

انہوں نے بتایا: 'میں کشمیر یونیورسٹی کے وائس چانسلر سے بات کروں گا۔ اگر وہ ہمیں یہاں جگہ دیتے ہیں تو ہم یہاں اپنا ایک مستقل بک اسٹال قائم کریں گے۔ ہم نئی دہلی میں اپنے ہیڈکوارٹر پر اس حوالے سے تمام تکنیکی پہلوئوں کا جائزہ لیں گے۔ اس کے بعد ہی کوئی پیش رفت نکل کر سامنے آسکتی ہے'۔

قومی اردو کونسل کے ڈائریکٹر نے بتایا کہ اردو کتاب میلے کی کامیابی کا سہرا مقامی لوگوں، طلباء اور کشمیر یونیورسٹی کے عملے کو جاتا ہے۔ ان کا کہنا تھا: 'میں میلے کو کامیاب بنانے کے لئے یہاں کے لوگوں، طلباء اور کشمیر یونیورسٹی کے عہدیداروں و تدریسی و غیر تدریسی عملے کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں'۔