آئی پی ایل 2020: ماضی کے دھونی 'موجودہ دھونی' سے خوش نہیں ہوں گے... عرفان

عرفان پٹھان کا کہنا ہے کہ چنئی سپر کنگز کے کپتان خود سے کہہ رہے ہوں گے انڈین پریمیر لیگ کے اگلے ایڈیشن میں زیادہ فٹ نیس اور مضبوطی سے واپسی کرنی ہوگی۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

نئی دہلی: سابق ہندوستانی آل راؤنڈر عرفان پٹھان نے کہا ہے کہ 11-2010 کے مہندر سنگھ دھونی سال 2020 کے دھونی سے خوش نہیں ہوں گے۔دھونی کے ساتھ بہت زیادہ کرکٹ کھیلنے والے بائیں ہاتھ کے اس تیز گیند باز کا خیال ہے کہ چنئی سپر کنگز کے کپتان خود سے کہہ رہے ہوں گے انڈین پریمیر لیگ کے اگلے ایڈیشن میں زیادہ فٹ نیس اور مضبوطی سے واپسی کرنی ہوگی۔

عرفان پٹھان نے اسٹار اسپورٹس پر کہا کہ اگر ہم اکیلے اگلے سیزن کے بارے میں بات کریں تو،میں دھونی کو چنئی کے کے لئے پورا سیزن کھیلتا دیکھ کر اپنے ذہن میں سوچ رہا تھا کہ 2010 یا 2011 کے کپتان دھونی اس صورتحال میں 2020 کے دھونی کو کیا کہتے ہوں گے۔بلا شبہ انھوں نے اگلے سال بہتر فٹنس اور کارکردگی کے ساتھ واپسی کا عزم کیا ہوگا اور یہ واضح ہے کہ انہوں نے بھی ایسا ہی سوچا ہوگا اور یہی توقع ہے۔


آئی پی ایل کی تاریخ کے بدترین سیزن کے خاتمے کے پیچھے دھونی کے بیٹ کے ساتھ رنز کی کمی ایک بڑی وجہ تھی جو 11 سالوں میں پہلی مرتبہ پلے آف میں کوالیفائی کرنے میں ناکام رہی۔ دھونی نے 25 کی اوسط اور 116.37 کی اسٹرائک ریٹ سے صرف 200 رنز بنائے - رن، اوسط اور اسٹرائیک ریٹ کے لحاظ سے آئی پی ایل میں ان کا بدترین سیزن ہے۔ یہ بھی پہلا موقع تھا جب چنئی سپر کنگز کے کپتان آئی پی ایل کے ایک ہی سیزن میں 250 رنز کا ہندسہ عبور کرنے میں ناکام رہے۔

تاہم دھونی نے چنئی سپر کنگز کے لاکھوں شائقین کے چہروں پر مسکراہٹیں لائیں جب انہوں نے اعلان کیا کہ وہ اگلے آئی پی ایل میں کھیلنے کے لئے واپس آئیں گے جو صرف پانچ ماہ کی دوری پر ہے۔ سابق ہندوستانی کپتان، جنہوں نے اگست میں اپنے بین الاقوامی کیریئر کا خاتمہ کیا، نے میچ سے قبل شائقین کو یقین دلایا کہ وہ ’پیلے رنگ کی جرسی میں واپس آئیں گے‘۔واضح رہے کہ ٹاس کے دوران نیوزی لینڈ کے سابق فاسٹ بولر ڈینی موریسن کے ذریعے دریافت کئے جانے پر دھونی نے نفی میں جواب دیا تھا،موریسن نے پوچھا کہ کیا کنگز الیون پنجاب کے خلاف چنئی کے لئے یہ میچ آخری تھا تو دھونی نے کہا تھا کہ یقینی طور پر نہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔