شمالی کوریا کی عسکری سرگرمیاں عالمی برادری کے لیے خطرہ: امریکہ

امریکی محکمہ دفاع ’پینٹاگون‘ نے کہا کہ ’’ہم ڈی پی آر کے کروز میزائل لانچ ہونے کی رپورٹ سے آگاہ ہیں۔ ہم صورتحال پر نظر رکھیں گے اور اپنے اتحادیوں اور شراکتداروں کے ساتھ بات چیت کر رہے ہیں ‘‘۔

پینٹاگون، تصویر آئی اے این ایس
پینٹاگون، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

واشنگٹن: امریکہ نے کہا ہے کہ اسے شمالی کوریا کے حالیہ میزائل تجربے کے تعلق سے اطلاع موصول ہوئی ہے اور وہ اس طرح کی سرگرمیوں کو عالمی برادری کے لیے خطرہ سمجھتا ہے۔ شمالی کوریا کی کورین سنٹرل نیوز ایجنسی ( کے سی این اے) نے پیر کی صبح بتایا کہ شمالی کوریا نے ہفتے کے آخر میں طویل فاصلے تک مار کرنے کی صلاحت رکھنے والے ایک نئی طرح کے کروز میزائل کا تجربہ کیا۔

امریکی محکمہ دفاع ’پینٹاگون‘ نے کہا کہ ’’ہم ڈی پی آر کے کروز میزائل لانچ ہونے کی رپورٹ سے آگاہ ہیں۔ ہم صورتحال پر نظر رکھیں گے اور اپنے اتحادیوں اور شراکتداروں کے ساتھ بات چیت کر رہے ہیں ‘‘۔ پینٹاگون نے شمالی کوریا کی عسکری سرگرمیوں کو ’اپنے پڑوسیوں اور عالمی برادری کے لیے خطرہ‘ کو بڑھانے والا بتایا اور امریکہ جنوبی کوریا اور جاپان کی حفاظت کے لیے پرعزم ہے۔


کے سی این اے کے مطابق شمالی کوریا نے ہفتے اور اتوار کو نئے میزائلوں کا تجربہ کیا۔ طویل فاصلے تک مار کرنے والے ان کروز میزائلوں نے ہدف کو نشانہ بنانے سے پہلے 1500 کلومیٹر (932 میل) اڑان بھری۔ ایجنسی نے بتایا کہ دو سال کی تیاری اور تحقیق کے بعد کیا گیا یہ تجربہ کامیاب رہا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔