روس کے خلاف ’ناٹو‘ کا سخت قدم، 100 جنگی طیاروں کو کیا تعینات

ناٹو کا کہنا ہے کہ روس کو بین الاقوامی اصولوں کا احترام کرتے ہوئے یوکرین سے اپنی فوج کو واپس بلانا چاہیے، ساتھ ہی ناٹو نے کہا کہ روس کی نیت دنیا دیکھ رہی ہے،وہ یوکرین پر اپنی طاقت کا استعمال کر رہا ہے

ناٹو جنرل سکریٹری جینس اسٹولٹین برگ، تصویر یو این آئی
ناٹو جنرل سکریٹری جینس اسٹولٹین برگ، تصویر یو این آئی
user

قومی آوازبیورو

نارتھ اٹلانٹک ٹریٹی آرگنائزیشن (ناٹو) نے روس کے خلاف سخت قدم اٹھاتے ہوئے اسے متنبہ کیا ہے کہ وہ فوراً اپنی فوج کو یوکرین سے باہر نکالے ورنہ سنگین نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق ناٹو نے 100 جنگی طیاروں کو تعینات بھی کر دیا ہے اور کسی بھی وقت روس کے خلاف کارروائی کا اعلان کر سکتا ہے۔ ناٹو نے کہا ہے کہ روس کو بین الاقوامی اصولوں کا احترام کرنا چاہیے اور یوکرین سے اپنی فوج کو باہر نکالنے پر غور کرنا چاہیے۔ ناٹو نے یہ بھی کہا کہ روس کی نیت دنیا دیکھ رہی ہے، وہ یوکرین پر اپنی طاقت کا استعمال کر رہا ہے۔ ناٹو جنرل سکریٹری جینس اسٹولٹین برگ نے یوکرین پر روسی کارروائی کو بے وجہ اور نامناسب قرار دیتے ہوئے اس کی سخت الفاظ میں مذمت کی ہے۔

ناٹو کی ایک غیر معمولی میٹنگ کے بعد بروسیلز (بلجیم) واقع ناٹو ہیڈکوارٹر میں میڈیا سے اسٹولٹین برگ نے کہا کہ ہمارے پاس اپنے ہوائی علاقے کی حفاظت کرنے والے 100 سے زائد طیارے اور شمال سے بحیرۂ روم تک سمندر میں 120 سے زائد جنگی جہازوں کا بیڑا ہے۔ ہم اپنے ساتھی کو حملے سے بچانے کے لیے جو بھی ضروری ہوگا، وہ کریں گے۔ اسٹولٹین برگ مزید کہتے ہیں کہ ’’ہم روس سے اپنی فوجی کارروائی کو فوراً روکنے اور یوکرین سمیت اس کے آس پاس سے اپنی سبھی قوتوں کو واپس لینے کو کہتے ہیں۔‘‘


ناٹو جنرل سکریٹری نے روس سے بین الاقوامی انسانی قوانین کا پوری طرح سے احترام کرنے اور سبھی ضرورت مند لوگوں کو محفوظ رکھنے اور ان تک ضروری امداد پہنچانے کی اجازت دینے کی اپیل کی ہے۔

اس درمیان خبر سامنے آ رہی ہے کہ یوکرین کی راجدھانی کیو میں ہوسٹومیل ہوائی اڈہ پر روس نے بڑا حملہ کر دیا ہے۔ روسی فوج لگاتار یوکرین میں اندر تک داخل ہو رہی ہے۔ حالانکہ یوکرین بھی پوری طاقت کے ساتھ مقابلہ کر رہا ہے۔ یوکرین کی فوج نے دو روسی فوجیوں کو یرغمال بنائے جانے کا دعویٰ بھی کیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔