جاپان نے شمالی کوریا کے بیلسٹک میزائل تجربے پر احتجاج درج کرایا

یوشی ہیڈے سوگا نے کہا کہ ’’اس تجربےسے ہمارے ملک اور خطے کے امن و سلامتی کو خطرہ لاحق ہے۔ یہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہے۔ جاپان اس کی شدید مذمت کرتا ہے‘‘۔

یوشی ہیڈے سوگا، تصویر آئی اے این ایس
یوشی ہیڈے سوگا، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

ٹوکیو: جاپان کے وزیر اعظم نے یوشی ہیڈے سوگا نے جمعرات کے روز اس بات کی تصدیق کی ہے کہ شمالی کوریا نے جاپان کے سمندر کی طرف دو بیلسٹک میزائل داغے ہیں جس پر جاپان نے اپنا احتجاج درج کرایا ہے۔ یوشی ہیڈے سوگا نے کہا کہ ’’اس تجربےسے ہمارے ملک اور خطے کے امن و سلامتی کو خطرہ لاحق ہے۔ یہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کی خلاف ورزی ہے۔ جاپان اس کی شدید مذمت کرتا ہے‘‘۔ اس سے قبل جاپانی میڈیا نے جمعرات کے روز اطلاع دی کہ شمالی کوریا نے ایک بیلسٹک میزائل کا تجربہ کیا ہے، جو جاپان کے خصوصی اقتصادی خطے کے باہر گرا۔

شمالی کوریا کی جانب سے میزائل کے تجربے کی تصدیق بھی جنوبی کوریا کی افواج نے کی تھی۔ بعد ازاں سی این این نیوز چینل نے امریکہ کے ایک اعلیٰ عہدے دار کے حوالے سے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ شمالی کوریا نے دو میزائلوں کا تجربہ کیا ہے۔ واضح ر ہے کہ 29 مارچ 2020 کے بعد شمالی کوریا نے پہلی بار بیلسٹک میزائل کا تجربہ کیا تھا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔