فائزر کی کووِڈ ویکسین نوعمروں میں صد فیصد مؤثر: کمپنی کا دعویٰ

امریکہ نے مئی میں اس ٹیکے کو نوعمروں میں ہنگامی طور پر استعمال کے لیے منظوری فراہم کی تھی، یہ ویکسین فی الحال 16 سال یا اس سے زیادہ عمر کے لوگوں میں استعمال کے لئے منظور شدہ ہے

امریکہ میں نوعمر کی ٹیکہ کاری / Getty Images
امریکہ میں نوعمر کی ٹیکہ کاری / Getty Images
user

قومی آوازبیورو

واشنگٹن: امریکی دوا ساز کمپنیوں فائزر اور بائیو این ٹیک نے کہا ہے کہ ان کی کورونا ویکسین 12 سے 15 سال کی عمر کے بچوں میں دوسری خوراک کے چار ماہ بعد صد فیصد موثر ثابت ہوئی ہے۔ کمپنیوں نے دعویٰ کیا ہے کہ نیا ڈیٹا 2228 افراد پر کی گئی آزمائش پر مشتمل ہے اور ریاستہائے متحدہ اور دنیا بھر میں ویکسین کی مکمل منظوری کے لیے ان کی درخواستوں میں مدد فراہم کرے گا۔

کمپنی کی طرف سے کہا گیا ہے کہ ویکسین کی دونوں خوراکوں کے بعد کم از کم 6 ماہ کے فالو اپ کے دوران کسی بھی شخص میں حفاظتی خدشات نہیں پائے گئے۔ فائزر کے سی ای او البرٹ بوئرلا نے ایک بیان میں کہا، ’’جیسا کہ عالمی ادارہ صحت دنیا بھر میں ٹیکہ کاری کرنے والے لوگوں کی تعداد میں اضافہ کرنے کے لیے کام کرتا ہے، یہ اضافی ڈیٹا نوعمروں میں ہماری ویکسین کی حفاظت اور تاثیر کے پروفائل پر مزید اعتماد فراہم کرتا ہے۔‘‘


انہوں نے کہا کہ "یہ خاص طور پر اہم ہے کیونکہ ہم کچھ علاقوں میں اس عمر کے گروپ میں کورونا کے انفیکشن میں اضافے کی شرح دیکھتے ہیں، جبکہ ویکسین حاصل کرنے والے علاقوں میں انفیکشن کی رفتار کم ہو گئی ہے۔ ہم ان اعداد و شمار کو ایف ڈی اے اور دیگر ریگولیٹرز کے ساتھ اشتراک کرنے کے لئے پرعزم ہیں۔‘‘

امریکہ نے مئی ماہ میں اس ٹیکے کو نوعمروں میں ہنگامی طور پر استعمال کے لیے منظوری فراہم کی تھی، یہ ویکسین فی الحال 16 سال یا اس سے زیادہ عمر کے لوگوں میں استعمال کے لئے منظور شدہ ہے۔ کمپنی کی طرف سے پیش کردہ 2228 افراد میں سے 30 افراد بغیر کسی انفیکشن ظاہر ہونے والے کورونا معاملے تھے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔