’مجھے اعترافِ جرم کرنے پر مجبور کیا گیا‘ درخواست ضمانت میں ریا کا دعویٰ

سیشن عدالت میں دائر درخواست ضمانت میں ریا نے دعویٰ کیا کہ انہوں نے کسی جرم کا ارتکاب نہیں کیا ہے، انہیں بیجا پھنسایا جا رہا ہے۔ ریا چکرورتی اور ان کے بھائی این سی بی کی طرف سے جیل بھیجے جا چکے ہیں۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

ممبئی: سوشانت سنگھ راجپوت کی موت سے متعلق منشیات کے معاملے میں گرفتار ہونے والی ریا چکرورتی نے الزام عائد کیا ہے کہ ممبئی کی عدالت میں دائر اپنی درخواست ضمانت میں الزام عائد کیا ہے کہ انسداد منشیات بیورو (این سی بی) نے پوچھ گچھ کے دوران جرم کا اعتراف کرنے والا بیان دینے پر مجبور کیا گیا۔

سیشن عدالت میں دائر درخواست ضمانت میں انہوں نے دعویٰ کیا کہ انہوں نے کسی جرم کا ارتکاب نہیں کیا ہے اور انہیں اس معاملہ میں بیجا پھنسایا جا رہا ہے۔ ریا چکرورتی اور ان کے بھائی این سی بی کی طرف سے جیل بھیجے جا چکے ہیں۔ این سی بی نے ریا کو تین دن تک پوچھ گچھ کے بعد منگل کے روز گرفتار کیا گیا تھا۔ مجسٹریٹ کی عدالت سے ان کی درخواست ضمانت کو پہلے ہی نامنظور کیا جا چکا ہے۔

رِیا کی طرف سے پیش ہونے والے وکیل ستیش مانیندے نے عدالت میں درخواست ضمانت پیش کی۔ درخواست میں انہوں نے کہا ’’تحویل میں پوچھ گچھ کے دوران ریا کو اعتراف جرم والا بیان دینے پر مجبور کیا گیا۔ اداکارہ ایسے تمام قبول ناموں کو باضابطہ طور پر واپس لیتی ہیں۔ عرضی میں کہا گیا ہے کہ ریا چکرورتی کی گرفتاری غیر ضروری اور بغیر کسی ثبوت کے کی گئی ہے۔

درخواست میں کہا گیا کہ ’’اداکارہ کی آزادی پر منمانے طریقہ سے قدغن لگائی گئی اور ان سے پوچھ گچھ کے دوران کوئی خاتون افسر بھی موجود نہیں تھی۔‘‘ واضح رہے کہ ریا کے علاوہ ان کے بھائی شووک بھی فی الحال عدالتی تحویل میں ہیں۔ ان دونوں کو این سی بی نے گرفتار کیا ہے اور دونوں کو ہی ڈرگ معاملہ میں ملزم بنایا گیا ہے۔

next