راشد خان آسٹریلیا کے ذریعہ افغانستان کے خلاف کرکٹ سیریز رد کرنے سے ناراض، بگ بیش لیگ چھوڑنے کی دھمکی

راشد خان نے کرکٹ آسٹریلیا کے فیصلے پر اپنی مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے لکھا ہے کہ ’’میں یہ سن کر بہت افسردہ ہوں کہ آسٹریلیا نے ہمارے ساتھ مارچ میں ہونے والی یک روزہ سیریز رد کر دی۔‘‘

افغانستان کے معروف کرکٹ کھلاڑی راشد خان
افغانستان کے معروف کرکٹ کھلاڑی راشد خان
user

قومی آوازبیورو

طالبان حکومت کے ذریعہ افغانستان میں لڑکیوں کی تعلیم پر پابندی عائد کیے جانے سے ناراض کرکٹ آسٹریلیا نے افغانستان کے ساتھ یک روزہ سیریز کھیلنے سے انکار کر دیا ہے۔ سیریز رَد ہونے کی خبر ملنے کے بعد افغانستان کے مشہور و معروف کرکٹر راشد خان نے اس پر اپنی شدید ناراضگی کا اظہار کیا ہے۔ انھوں نے کہا ہے کہ کرکٹ کو سیاست سے الگ رکھنا چاہیے، اور اگر ایسا نہیں ہوا تو وہ بگ بیش لیگ چھوڑنے کے بارے میں بھی فیصلہ لے سکتے ہیں۔

دراصل کرکٹ آسٹریلیا نے مارچ میں افغانستان کے خلاف ہونے والی تین میچوں کی یک روزہ سیریز رد کرنے کا گزشتہ روز اعلان کر دیا۔ اس پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے راشد خان نے کہا ہے کہ افغانستان کے ساتھ کرکٹ کھیلنے میں آسٹریلیا کو اچھا محسوس نہیں ہوتا تو میں بی بی ایل (بگ بیش لیگ) میں اپنی موجودگی سے انھیں پریشان نہیں کرنا چاہوں گا۔ سوشل میڈیا پر ڈالے گئے ایک پوسٹ میں راشد خان نے لکھا ہے ’’افغانستان کے لیے واحد امید کرکٹ ہی ہے۔ برائے کرم سیاست سے اس کو دور رکھیں۔‘‘


راشد خان نے کرکٹ آسٹریلیا کے فیصلے پر اپنی مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے لکھا ہے کہ ’’میں یہ سن کر بہت افسردہ ہوں کہ آسٹریلیا نے ہمارے ساتھ مارچ میں ہونے والی یک روزہ سیریز رد کر دی۔ مجھے اپنے ملک کے لیے کھیلنے پر ہمیشہ فخر ہوا ہے اور ہم نے کرکٹ ورلڈ میں گزشتہ کچھ وقت میں اچھی ترقی کی ہے۔ کرکٹ آسٹریلیا کا یہ فیصلہ ہمیں اپنے سفر میں پیچھے دھکیلنے والا ہے۔‘‘ ساتھ ہی راشد لکھتے ہیں کہ ’’اگر افغانستان کے ساتھ کرکٹ کھیلنے میں آسٹریلیا کو اچھا محسوس نہیں ہوتا ہے تو میں بی بی ایل میں اپنی موجودگی سے انھیں پریشان نہیں کرنا چاہوں گا۔ اس لیے میں اب اس ٹورنامنٹ میں اپنے مستقبل کو لے کر سنجیدگی کے ساتھ غور کروں گا۔‘‘

واضح رہے کہ آسٹریلیا اور افغانستان کے درمیان یک روزہ سیریز یو اے ای میں منعقد ہونی تھی۔ سیریز رد کرنے کے پیچھے کرکٹ آسٹریلیا نے طالبا کے اس اعلان کو ذمہ دار ٹھہرایا تھا جس میں طالبان نے افغانستان میں خواتین اور لڑکیوں کی تعلیم و روزگار پر پابندی لگانے کی بات کہی تھی۔ کرکٹ آسٹریلیا نے کہا تھا کہ ’’ہم نے مارچ میں افغانستان کے خلاف ہونے والی یک روزہ سیریز سے ہٹنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ہم اس کھیل کو افغانستان سمیت دنیا بھر میں حمایت کرتے ہیں اور بڑھانا چاہتے ہیں۔ ہم اس امید میں افغانستان کرکٹ بورڈ سے جڑے رہیں گے کہ وہاں خواتین اور لڑکیوں کی حالت میں آگے بہتری ہو۔‘‘

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔