سیکورٹی سے متعلق انٹیلی جنس رپورٹ ملنے کے بعد نیوزی لینڈ نے پاکستان دورہ منسوخ کیا

نیوزی لینڈ کرکٹ نے آج راولپنڈی میں ون ڈے سیریز کا پہلا میچ شروع ہونے سے چند منٹ قبل دورہ منسوخ کر دیا کیونکہ سیکورٹی خطرات کے حوالے سے ان کے ملک کی حکومت کی جانب سے انٹیلی جنس معلومات ملی تھیں۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

نئی دہلی: پاکستان اور نیوزی لینڈ سیریز سیکورٹی خدشات کے باعث آج منسوخ کردی گئی۔ نیوزی لینڈ کرکٹ نے راولپنڈی کرکٹ اسٹیڈیم میں پہلا میچ شروع ہونے سے قبل ’سیکورٹی خدشات‘ کی وجہ بتا کر یہ دورہ پاکستان منسوخ کر دیا۔ نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم 18 سال بعد تین ون ڈے اور پانچ ٹی-20 انٹرنیشنل کھیلنے کے لیے 11 ستمبر کو پاکستان آئی تھی۔

نیوزی لینڈ کرکٹ نے آج راولپنڈی میں ون ڈے سیریز کا پہلا میچ شروع ہونے سے چند منٹ قبل دورہ منسوخ کر دیا کیونکہ سیکورٹی خطرات کے حوالے سے ان کے ملک کی حکومت کی جانب سے انٹیلی جنس معلومات ملی تھیں۔ نیوزی لینڈ کرکٹ نے ایک ریلیز میں کہا کہ ’’پاکستان میں نیوزی لینڈ کی حکومت کے سیکورٹی خطرے کے بڑھتے ہوئے خدشات اور نیوزی لینڈ کرکٹ سیکورٹی ایڈوائزرز کے مشورے کے بعد یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ نیوزی لینڈ ٹیم کا یہ دورہ نہیں ہوگا۔ آگے بڑھو۔‘‘ اب ٹیم کی روانگی کے انتظامات کیے جا رہے ہیں۔


نیوزی لینڈ کرکٹ کے چیف ایگزیکٹو ڈیوڈ وائٹ نے کہا کہ ’’ہم اس فیصلے کی مکمل حمایت کرتے ہیں، کھلاڑیوں کی حفاظت سب سے پہلے ہے اور وہ سبھی محفوظ ہیں۔‘‘ اس سے قبل پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا کہ ’’نیوزی لینڈ کرکٹ بورڈ نے آگاہ کیا ہے کہ انہیں سیکورٹی کے حوالے سے الرٹ کیا گیا تھا جس کے بعد پی سی بی کی پاکستان حکومت سے بات چیت ہوئی تھی اور پاکستان کی حکومت نے یقین دہانی کرائی تھی کہ حفاظتی انتظامات میں کسی طرح کی کوئی کمی نہیں ہوگی۔‘‘ بتایا جاتا ہے کہ دونوں ممالک کے وزرائے اعظم کے درمیان اس معاملے پر بات چیت بھی ہوئی۔ پی سی بی نے نیوزی لینڈ سے سیریز جاری رکھنے کی درخواست بھی کی لیکن نیوزی لینڈ کرکٹ نے ان کی بات نہیں مانی۔

نیوزی لینڈ کرکٹ کے چیف ایگزیکٹو ڈیوڈ وائٹ کا کہنا ہے کہ ’’انہیں جو صلاح مل رہی تھی اس کے پیش نظر دورہ جاری رکھنا ممکن نہیں تھا۔‘‘ انہوں نے کہا کہ میرے خیال میں یہ پی سی بی کے لیے ایک دھچکا ہوگا، جو بہترین میزبان رہے ہیں، لیکن کھلاڑیوں کی حفاظت سب سے اہم ہے۔ نیوزی لینڈ کرکٹ کی جانب سے جاری بیان میں مزید کہا گیا کہ ’’ہم سیکورٹی خطرے کی تفصیلات پر کوئی تبصرہ نہیں کریں گے اور نہ ہی واپس آنے والے اسکواڈ کے تازہ ترین انتظامات پر کوئی رائے دیں گے۔‘‘

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔