آئی سی سی نے نسلی تبصرے پر کرکٹ آسٹریلیا سے طلب کی رپورٹ

ملک واپس آئے کپتان وراٹ کوہلی نے بھی ٹوئٹر پر اس معاملے میں اپنی ناراضگی ظاہر کی ہے۔ کرکٹ اسٹریلیا نے اس معاملے پر معافی بھی مانگ لی ہے۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

دوبئی: بین الاقوامی کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے سڈنی میں تیسرے ٹسٹ آسٹریلیا کے کچھ شائقین کے ہندوستانی کھلاڑیوں پر نسلی تبصرے کرنے کی سخت مذمت کرتے ہوئے کرکٹ آسٹریلیا سے اس معاملے پر رپورٹ طلب کی ہے۔ سڈنی میں تیسرے ٹسٹ کے تیسرے اور چوتھے دن شائقین کے ایک طبقے نے جسپریت بمراہ اور محمد سراج پر نسلی تبصرے کیے۔ ہندوستانی ٹیم نے تیسرے دن کے کھیل کے بعد اس معاملے میں باضاطہ شکایت درج کرائی۔ اتوار کو چوتھے دن یہ واقعہ پھرسے نہ ہو اس پر سراج نے امپائروں کی توجہ اس جانب مبذول کرائی جس کے بعد کچھ دیر کے لئے کھیل روک دیا گیا۔

چھ شائقین کو اسٹیڈیم سے باہر کر دیا گیا ہے اور دن کے کھیل کے بعد ہندوستانی آف اسپنر روی چندرن اشون نے بھی کہا کہ ایسے واقعات سے سختی سے نمٹنا جانا چاہیے تاکہ انہیں روکا جاسکے۔ ملک واپس آئے کپتان وراٹ کوہلی نے بھی ٹوئٹر پر اس معاملے میں اپنی ناراضگی ظاہر کی ہے۔ کرکٹ اسٹریلیا نے اس معاملے پر معافی بھی مانگ لی ہے۔

آئی سی سی نے بیان جاری کرکے کہا کہ ’’ہم سڈنی کرکٹ میدان میں آسٹریلیا اور ہندوستان کے مابین چل رہے تیسرے ٹسٹ کے دوران نسل پرستی کے واقعات کی سخت مذمت کرتے ہیں اور اس کی جانچ میں کرکٹ آسٹریلیا کو سبھی ضروری حمایت دینے کی پیش کش کرتے ہیں‘‘۔

آئی سی سی کے چیف ایکزیکیٹیو افسر منو ساہنی نے کہا کہ آئی سی سی کسی بھی طرح کی تفریق کے تئیں زیرو ٹولیرینس کی پالیسی اختیار کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کھیل میں تفریق کے لئے کوئی جگہ نہیں ہے اور حیرانی کی بات ہے کہ شائقین کا ایک چھوٹا طبقہ اس طرح کی ذہینیت رکھتا ہے جو واقعی شرم کی بات ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next