یوم پیدائش پر خاص: کپِل دیو کو ’ہریانہ کا طوفان‘ کے نام سے بھی جانا جاتا ہے

ہندوستان میں کرکٹ جیسے کھیل کو لوگوں کی رگوں میں اتارنے والے کپِل دیو نے اپنے کرکٹ کے ابتدائی دور میں سخت محنت کی اور ہر روز اپنے کھیل میں سدھار لانے کی ہر ممکن کوشش کرتے رہے۔

کپل دیو، تصویر آئی اے این ایس
کپل دیو، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

(یوم پیدائش 6 جنوری)

نئی دہلی: دنیا میں کچھ لوگ ایسے بھی ہوتے ہیں جنہوں نے اپنے حوصلے اور محنت کے دم پر اپنے ملک کا نام تاریخ کے ان صفحات میں درج کرایا جن کو سنہرے حرفوں میں لکھا گیا۔ ہندوستان میں ہمیشہ سے ہی کرکٹ کو بہت زیادہ پسند کیا جاتا رہا ہے اور عالمی سطح پر جب کھیلوں کے ذریعہ ملک کا نام روشن کرنے والے کپِل دیو جیسے کھلاڑی ہوں، تو بات ہی الگ ہوجاتی ہے۔ جی ہاں، کپِل دیو، جن کی قیادت میں ہندوستان نے پہلی مرتبہ سال 1983 میں کرکٹ کا عالمی خطاب جیت کر تاریخ رقم کی۔

ہندوستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان آل راؤنڈر کپِل دیو نے ہندوستان کو کرکٹ کی دنیا میں بہت سی کامیابیاں دلانے میں اہم کردار ادا کیا ہے اور ہندوستان کو ایک نئی بلندی پر پہنچایا۔ ہندوستان میں کرکٹ جیسے کھیل کو لوگوں کی رگوں میں اتارنے والے کپِل دیو نے اپنے کرکٹ کے ابتدائی دور میں سخت محنت کی اور ہر روز اپنے کھیل میں سدھار لانے کی ہر ممکن کوشش کرتے رہے۔


دراصل انہوں نے کامیاب کرکٹر بننے سے قبل بہت ہی جدوجہد سے بھری زندگی گزاری۔ کپِل دیو ہمارے ملک کے ان چنندہ کھلاڑیوں میں سے ایک ہیں جنہوں نے عام حالات سے نکل کر اپنی بہترین کارکردگی سے عالمی سطح پر ملک کا نام روشن کیا۔ دراصل یہ کرکٹ کے تئیں ان کی سخت مشقت اور دیوانگی کا ہی نتیجہ تھا۔ کپِل دیو کا پورا نام کپِل دیو رام لال نکھنج ہے۔ ہندوستان کے سابق کپتان جنہیں بلے بازی میں جتنی مہارت حاصل تھی اس سے کہیں زیادہ انہوں نے گیند بازی میں اپنے فن کا مظاہرہ کیا۔ ان کو ’ہریانہ کا طوفان‘ کے نام سےبھی یاد کیا جاتا ہے۔

کپِل دیو 6 جنوری 1959 کو پیدا ہوئے۔ انہوں نے ڈی اے وی، پبلک اسکول چندی گڑھ سے تعلیم حاصل کی۔ جبکہ سینٹ ایڈورڈ کالج سے بقیہ تعلیم حاصل کی۔ ان کو بچپن سے ہی کرکٹ سے گہری دلچسپی رہی۔ اس کے علاوہ گولف کھیلنا اور موسیقی سننا ان کا پسندیدہ مشغلہ رہا۔ انہوں نے سال 1971 میں دیش پریم آزاد کرکٹ کو جوائن کیا جہاں یہ کرکٹ سیکھتے تھے۔ انہوں نے اپنا کیرئیر سال 1975 سے شروع کیا۔ انہوں نے ہریانہ کے لئے پنجاب کے خلاف اپنا پہلا میچ کھیلا تھا۔ جس میں کپِل دیو نے 6 وکٹ کے ساتھ ہریانہ کو شاندار جیت دلائی تھی، اس میچ میں پنجاب کی ٹیم کل63 رن ہی بناسکی تھی۔ سال 77-1976 میں جموں و کشمیر کے خلاف کھیلے گئے ایک میچ میں انہوں نے 8 وکٹ لئے اور 36 رن بنائے۔ اسی سال بنگال کے خلاف اپنی بہترین گیند بازی کا مظاہرہ کرتے ہوئے انہوں نے 7 وکٹ لئے۔


کپِل ایک بہترین بلے باز تھے، سال 1979 میں انہوں نے دہلی کے خلاف 193 رنوں کی شاندار اننگز کھیلی، جس میں وہ ناٹ آؤٹ رہے۔ یہ سنچری ان کے کیرئر کی پہلی سنچری تھی۔ جس کے بعد یہ ثابت ہوگیا کہ وہ ایک بہترین گیندباز ہونے کے ساتھ ساتھ ایک شاندار بلے باز بھی ہیں۔ ان کی کرکٹ میں انٹری بھی ایک اتفاق رہا۔ ایک میچ میں چندی گڑھ کی ٹیم میں ایک کھلاڑی کم رہ گیا تھا اور کپِل وہاں موجود تھے۔ لہذا کپِل دیو کو ٹیم میں شامل کرلیا گیا۔

کپِل دیو نے اپنا پہلا ایک روزہ بین الاقوامی میچ یکم اکتوبر 1978 میں پاکستان کے خلاف کوئٹہ میں کھیلا تھا۔ جبکہ اپنی ٹسٹ میچوں کی شروعات بھی پاکستان کے خلاف فیصل آباد میں 18 اکتوبر 1978 میں کھیل کر کی۔ کپِل دیو کی سب سے پسندیدہ کرکٹ ٹیم ہندوستان کی دیرینہ حریف پاکستان رہی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔