پی ایف گھپلہ: ملازمین کے اہل خانہ کریں گے احتجاجی مظاہرہ

ڈی ایچ ایف ایل میں سرمایہ کاری کے لئے جن کمپنیوں نے کام کیا ان میں ابھینو کی بھی شراکت داری تھی۔ ابھی تک جانچ میں نو کمپنیاں فرضی پائی گئی ہیں

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

لکھنؤ: اترپردیش پاور کارپوریشن لمٹیڈ کے ملازمین کے پی ایف کی رقم کی سرمایہ کاری ڈی ایچ ایف ایل میں کرنے میں اہم کردار ادا کرنے والے ابھینو گپتا کو ای او ڈبلیو نے گرفتار کرلیا ہے جبکہ ملازمین کے اہل خانہ کل اس معاملے میں قصوروار دیگر افراد کو جلد گرفتار کرنے کے لئے احتجاج کریں گے۔

بجلی ملازمین یونین کے کوآرڈینیٹر شیلیندر دوبے نے بدھ کو کہا کہ ملازمین کے اہل خانہ محکمہ بجلی کے دفتر پر کل احتجاجی مظاہرہ کریں گے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ گھپلے کے ذمہ دار افرار کو گرفتار کرنے میں حکومت تساہلی سے کام لے رہی ہے۔ اس کےعلاوہ سی بی آئی کو جانچ سونپنے میں بھی تاخیر کی جا رہی ہے۔

ابھینو گپتا پہلے ہی گرفتار ہوچکے ٹرسٹ کے اس وقت کے سکریٹری پی کے گپتا کے بیٹے ہیں۔ پی کے گپتا کی گرفتار کے بعد سے ہی ای او ڈبلیو نے ابھینو کو پوچھ گچھ اور بیان درج کرانے کے لئے مسلسل نوٹس بھیج رہی تھی۔ نوئیڈا پولس کی مسلسل دبش کے درمیان ابھینو نے منگل کو اکانومک اوفینس ونگ کے دفتر پر خودسپردگی کردی۔ پی ایف گھپلہ معاملے میں ابھینو کو اہم کڑی مانا جا رہا ہے۔ وہ نوئیڈا سیکٹر۔121 میں رہ کر ریئل اسٹیٹ کا کاروبار کرتا ہے۔

ذرائع کے مطابق ٹرسٹ اور ڈی ایچ ایف ایل کے درمیان سودے کے بدلے اس نے موٹا کمیشن لیا تھا۔ کمیشن کی رقم ریئل اسٹیٹ کے کاروبار میں لگانے کے لئے اس نے نوئیڈا کے کچھ کاروباریوں کو اپنا شراکت دار بنایا تھا۔ ابھینو نے پوچھ گچھ میں کئی اہم راز فاش کیے ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈی ایچ ایف ایل میں سرمایہ کاری کے لئے جن کمپنیوں نے کام کیا ان میں ابھینو کی بھی شراکت داری تھی۔ ابھی تک جانچ میں نو کمپنیاں فرضی پائی گئی ہیں۔ ای او ڈبلیو ان کے بینک کھاتوں، ملکیت اور دیگر مقامات پر کیے گئے سرمایہ کاری کے بارے میں معلومات اکٹھا کر رہی ہے۔