ایندھن سے کمائے 26 لاکھ کروڑ روپے کا حساب دے حکومت: کانگریس

انہوں نے کہا کہ حکومت نے تیل پر ٹیکس سے 26 لاکھ کروڑ روپے کمائے ہیں اور اسے اس کمائی کا حساب ملک کے عوام کو دینا چاہئے۔

پٹرول اور ڈیزل / تصویر آئی اے این ایس
پٹرول اور ڈیزل / تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

نئی دہلی: کانگریس نے اتوار کو پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافے پر سخت ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے پچھلے چھ دنوں میں پانچویں بار ایندھن کی قیمتوں میں اضافہ کیا ہے اور وہ مسلسل لوٹنے کا کام کر رہی ہے۔

کانگریس کے ترجمان سنجے نروپم اور پون کھیڑا نے اتوار کو یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر میں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ مودی حکومت نے 157 دنوں تک تیل کی قیمتوں میں اضافہ نہیں کیا، کیونکہ اسمبلی انتخابات چل رہے تھے اور تب اس کے منفی نتائج نکل سکتے تھے، لیکن اب وہ مسلسل تیل کی قیمت بڑھا رہی ہے۔


انہوں نے کہا کہ حکومت نے تیل پر ٹیکس سے 26 لاکھ کروڑ روپے کمائے ہیں اور اسے اس کمائی کا حساب ملک کے عوام کو دینا چاہئے۔ کانگریس کے رہنماؤں نے کہا کہ آج پٹرول کی قیمت میں 50 پیسے کا اضافہ ہوا ہے اور مودی بھکت اس بات سے خوش ہیں کہ ایندھن کی قیمت میں 80 پیسے کے بجائے 50 پیسے کا اضافہ کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس اس اضافہ کی مخالفت کرتی رہے گی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔