جنسی ہراسانی معاملے میں اداکار کمال راشد خان کی درخواست ضمانت منظور، مگر جیل سے رہا نہیں ہو سکیں گے

وکیل دفاع نے یہ دلیل بھی پیش کی کہ خان کے خلاف انڈین پینل کوڈ کی جن دفعات کا نفاذ کیا گیا ہے وہ تمام قابل ضمانت ہیں۔ عدالت نے وکیل دفاع کے دلائل سے اتفاق کرتے ہوئے درخواست ضمانت منظور کر لی۔

اداکار کمال راشد خان، تصویر آئی اے این ایس
اداکار کمال راشد خان، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

ممبئی: ممبئی کی مقامی باندرہ عدالت نے آج یہاں جنسی ہراسانی اور خاتون اداکارہ سے چھیڑ چھاڑ کے معاملے میں مضافاتی ورسووا پولیس کی جانب سے گرفتار کئے گئے اداکار کمال راشد خان (کے آر کے) کو ضمانت پر رہا کئے جانے کا حکم جاری کیا، لیکن اداکار کی فوری طور پر جیل سے رہائی عمل میں نہیں آئے گی، کیونکہ، اداکار اکشے کمار اور فلم ساز رام گوپال ورما کے تعلق سے متنازعہ ٹوئٹس کے 2020 کے معاملے میں وہ فی الوقت عدالتی تحویل میں ہیں اور اس معاملے میں ان کی ضمانت کی درخواست بوریولی مجسٹریٹ عدالت میں زیر التوا ہے۔

اداکار کی جانب سے وکیل دفاع اشوک سروگی نے درخواست ضمانت پر بحث کرتے ہوئے عدالت کو بتایا کہ ملزم کے خلاف پولیس نے جو ایف آئی آر درج کی ہے اس کا مواد مبینہ طور پر چھیڑ چھاڑ کے واقعے سے عملی طور پر میل نہیں کھاتا۔ عدالت کو یہ بھی بتایا گیا کہ ایف آئی آر متذکرہ جرم کے 18 ماہ بعد درج کی گئی تھی اور وہ بھی متاثرہ کے دوست کے کہنے کے مطابق درج کی گئی تھی۔

وکیل دفاع نے یہ دلیل بھی پیش کی کہ خان کے خلاف انڈین پینل کوڈ کی جن دفعات کا نفاذ کیا گیا ہے وہ تمام قابل ضمانت ہیں۔ عدالت نے وکیل دفاع کے دلائل سے اتفاق کرتے ہوئے درخواست ضمانت منظور کر لی۔ عدالت کے فیصلے کا تفصیلی آرڈر ابھی دستیاب نہیں ہے۔


اداکار کے خلاف ورسووا پولیس نے چھیڑ چھاڑ کا مقدمہ جون 2021 میں ایک 27 سالہ خاتون کی شکایت کی بنیاد پر تعزیرات ہند کی دفعہ 354(A) (ناپسندیدہ جسمانی رابطے کی نوعیت کا جنسی طور پر ہراساں کرنا) اور 509 (شدت کی توہین کے ارادے سے لفظ یا اشارہ) کے تحت درج کیا تھا۔

شکایت کنندہ نے الزام لگایا تھا کہ خان نے اسے ایک فلم میں مرکزی کردار کی پیشکش کے بہانے ورسووا میں واقع اپنے بنگلے پر مدعو کیا تھا اور اسے ایک مشروب پیش کیا گیا جس کے پینے کے بعد وہ مدہوش ہوگئی اور اس کے بعد ملزم نے اس کے بدن کو نامناسب طریقے سے چھوا۔


دریں اثناء اپنے متنازعہ ٹوئیٹس کے معاملے میں خان کی ضمانت کی درخواست آج بوریولی میٹروپولیٹن مجسٹریٹ عدالت میں سماعت کے لیے آنے کا امکان ہے۔ اداکار کو 30 اگست کو ممبئی کے بین الاقوامی ہوائی اڈے سے مبینہ توہین آمیز ٹوئٹس پر گرفتار کیا گیا تھا اور بوریولی مجسٹریٹ عدالت نے عدالتی حراست میں بھیج دیا تھا۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


;