کیا آپ ’اضاحی‘ سے واقف ہیں؟ 27 ممالک ہوتے ہیں قربانی کے گوشت سے مستفید

اضاحی پروگرام 1983 میں شروع کیا گیا جسے اب تقریباً 40 سال کا عرصہ مکمل ہونے والا ہے، اس کامقصد سماجی کفالت کے ساتھ مذہبی شعائر کی ادائیگی میں آسانی پیدا کرنا ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

ریاض: سعودی عرب میں اضاحی پروگرام کے تحت قربانی کا گوشت 27 ممالک میں بھیجا جاتا ہے۔ اضاحی پروگرام ہر سال کی طرح امسال بھی جاری ہے جس میں قربانی کا گوشت مملکت کے دور دراز علاقوں سمیت دنیا بھر کے کئی ممالک میں بھیجا جارہا ہے۔

عرب میڈیا کے مطابق یہ پروگرام 1983 میں شروع کیا گیا جسے اب تقریباً 40 سال کا عرصہ مکمل ہونے والا ہے۔ اس کامقصد سماجی کفالت کے ساتھ مذہبی شعائر کی ادائیگی میں آسانی پیدا کرنا ہے۔ اضاحی پروگرام میں کئی ادارے ایک دوسرے سے باہمی تعاون کرتے ہیں اور دس سرکاری ادارے بھی اس نظام کو چلانے میں کردار ادا کرتے ہیں۔


حج کے ایام میں مکہ مکرمہ اور پھر سماجی انجمنوں کے ذریعے مملکت کے دور دراز علاقوں میں اضاحی پروگرام کے تحت قربانی کا گوشت تقسیم کیا جاتا ہے۔اس کے علاوہ 27 ممالک میں بھی قربانی کا گوشت بھیجا جاتا ہے اور قربانی اسکیم کے لیے آن لائن کوپن کی سہولت بھی میسر ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔