کورونا وائرس کے سبب دنیا بھر کی کھیل سرگرمیاں بری طرح متاثر

کورونا وائرس کے تیزی سے پھیلاؤ کے سبب دنیا بھر میں کھیلوں کی سرگرمیاں بھی بری طرح متاثر ہو رہی ہیں اور اکثر ملکوں نے اپنے بین الاقوامی اور گھریلو مقابلوں کو اپریل تک کے لیے ملتوی کر دیا ہے

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

لندن: عالمی پیمانے پر کورونا وائرس کے تیزی سے پھیلاؤ کے سبب دنیا بھر میں کھیلوں کی سرگرمیاں بھی بری طرح متاثر ہو رہی ہیں اور اکثر ملکوں نے اپنے بین الاقوامی اور گھریلو مقابلوں کو اپریل تک کے لیے ملتوی کر دیا ہے۔ دنیا کی مشہور ترین فٹبال لیگ انگلش پریمیئر لیگ سمیت برطانیہ میں ہونے والے تمام تر کھیلوں کے مقابلے 3 اپریل تک منسوخ کردیے گئے اور اس سلسلے میں مزید فیصلہ بھی اجلاس کے ذریعے کیا جائے گا۔ پریمیئر لیگ کا آئندہ جمعرات کو ایک اجلاس منعقد ہو گا جس میں صورتحال کو دیکھتے ہوئے مزید اہم فیصلے متوقع ہیں۔

گولف ماسٹرز اور لندن میراتھن کو بھی تاحکم ثانی ملتوی کردیا گیا ہے جبکہ دنیا بھر میں دیگر فٹبال لیگ کو بھی ملتوی کردیا گیا ہے۔ٹینس کے بعد اب تیراکی اور ریس کے بھی تمام مقابلوں کو احتیاطی تدابیر کے طور پر ملتوی کر دیا گیا ہے۔دنیا بھر کے دیگر کھیلوں کی طرح کرکٹ پر بھی کورونا بری طرح اثرانداز ہو رہا ہے جہاں گزشتہ روز انگلینڈ اور سری لنکا کے درمیان ٹیسٹ سیریز منسوخ ہونے کے بعد آج ہندستان اور جنوبی افریقہ کے درمیان سیریز کو بھی منسوخ کردیا گیا۔ دو روز قبل انڈین پریمیئر لیگ 15اپریل تک ملتوی کرنے کا اعلان کیا گیا تھا اور اب ہندستانی کرکٹ حکام نے موقف اپنایا ہے کہ وہ انڈین پریمیئر کا نیا شیڈول مرتب کرنے سے قبل صورتحال کے بہتر ہونے ا انتظار کریں گے۔

انڈین پریمیئر لیگ کی تمام فرنچائزوں نے بھی پریکٹس موخر کرتے ہوئے کھلاڑیوں کو گھر واپس جانے کی ہدایت کی ہے جبکہ ہندستانی کرکٹ بورڈ نے تاحکم ثانی تمام ڈومیسٹک مقابلوں کو بھی منسوخ کردیا ہے۔آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے درمیان جاری ون ڈے سیریز کے ساتھ ساتھ رواں ماہ کے آخر میں شیڈول ٹی 20 سیریز بھی موخر کردی گئی ہے۔ برطانیہ سمیت پورے یورپ میں تیزی سے بگڑتی صورتحال کے پیش نظر انگلش کرکٹ بورڈ نے کھیلوں کے بیشتر مقابلوں کو منسوخ یا بند اسٹیڈیم میں کرانے پر غور شروع کردیا ہے۔

ہر گزرتے دن کے ساتھ ابتر ہوتی ہوئی صورتحال کے سبب اب رواں سال ٹوکیو میں شیڈول کھیلوں کے سب سے بڑے مقابلے اولمپکس 2020 کے انعقاد پر بھی سوالیہ نشان لگ گیا ہے۔ یاد رہے کہ دنیا بھر میں تیزی سے پھیلتے کورونا وائرس سے پاکستان سپر لیگ پر بھی منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں اور لیگ کے شیڈول میں تبدیلی کرتے ہوئے چار دن پہلے ختم کرنے کا اعلان کیا گیا ہے۔موجودہ حالات کے سبب پی ایس ایل کی مختلف ٹیموں کی نمائندگی کرنے والے 14 غیرملکی کھلاڑی وطن واپس لوٹ گئے ہیں اور وہ لیگ میں مزید حصہ نہیں لیں گے۔