نوواک جوکووچ کو ملک بدری کی اپیل سے قبل حراست میں لے لیا گیا

آسٹریلیائی امیگریشن حکام نے ٹینس اسٹار نوواک جوکووچ کو عدالتی سماعت سے قبل حراست میں لے لیا تاکہ یہ طے کیا جا سکے کہ آیا وہ ویکسینیشن کے بغیر ملک میں رہ سکتے ہیں یا انہیں ملک بدر کر دیا جائے گا

جوکووچ، تصویر آئی اے این ایس
جوکووچ، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

کینبرا: آسٹریلیائی امیگریشن حکام نے اتوار کو ٹینس اسٹار نوواک جوکووچ کو عدالتی سماعت سے قبل حراست میں لے لیا تاکہ یہ طے کیا جا سکے کہ آیا وہ ویکسینیشن کے بغیر ملک میں رہ سکتے ہیں یا انہیں ملک بدر کر دیا جائے گا۔ بی بی سی نے ہفتہ کو یہ اطلاع دی۔

بی بی سی کے مطابق اس فیصلے کا مطلب ہے کہ ٹینس کے نمبر ون کھلاڑی کو اب ریلیگیشن کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے، حالانکہ انہیں آسٹریلیا میں رہنے کے لیے ایک اور قانونی چیلنج کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔


دنیا کے نمبر ایک ٹینس کھلاڑی 34 سالہ سربیا کے جوکووچ کو جمعہ کے روز دوسری بار ملک بدری کا سامنا کرنا پڑا جب ان کا ویزا منسوخ کر دیا گیا جب کہ آسٹریلوی حکومت نے انہیں ان کے خلاف ویکسین نہ لگانے پر عوامی خطرہ قرار دیا۔ جوکووچ اس وقت پیر کو آسٹریلین اوپن میں کھیلنے والے ہیں۔ ان کے وکلاء نے 'غیر معقول' فیصلے کے خلاف اپیل دائر کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

جوکووچ کے خلاف اگلی سماعت اتوار کو مقامی وقت کے مطابق 9:30 بجے ہو گی۔ اگر وہ اس اپیل کو کھو دیتے ہیں تو ا انہیں ملک بدری اور تین سالہ ویزا کی منسوخی کا سامنا کرنا پڑے گا۔ اگر جوکووچ کو ملک میں رہنے دیا جاتا ہے اور وہ دسویں بار ٹورنامنٹ جیتتے ہیں تو وہ اس کھیل کی تاریخ کے سب سے کامیاب مرد ٹینس کھلاڑی بن جائیں گے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔