شمالی امریکہ سے 30 سال میں تین ارب پرندے غائب

ابتدائی اندازے کے مطابق 1970 سے اب تک بعض اقسام کے چھوٹے بڑے پرندوں کی تعداد میں 29 فیصد کی کمی واقع ہوچکی ہے۔ 90 فیصد کمی صرف پرندوں کے 12 خاندانوں میں ہوئی ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

ٹورنٹو: دنیا کے ایک براعظم سے ایک تشویشناک خبر سامنے آئی ہے کہ گزشتہ 50 برس کے دوران شمالی امریکہ کے تین ارب پرندے غائب ہوچکے ہیں، اگرچہ اب بھی ان کی تعداد زیادہ ہے لیکن شمالی امریکہ میں پائے جانے والے کئی پرندوں کی آبادی میں حیرت ناک کمی واقعی ہوئی ہے۔

کورنیل یونیورسٹی میں جانوروں کی بقا کے ماہر پروفیسر کینتھ روزن برگ نے گزشتہ 48 برسوں سے کینیڈا اور امریکہ کے زمینی اسٹیشن سے پرندوں کے ڈیٹا بیس کا جائزہ لیا ہے۔ ان کے مطابق اس علاقے میں عام پائے جانے والے 529 اقسام کے پرندوں کی تعداد میں گزشتہ 30 برس میں دو ارب 90 کروڑ کی کمی ہوئی ہے۔


ابتدائی اندازے کے مطابق 1970 سے اب تک بعض اقسام کے چھوٹے بڑے پرندوں کی تعداد میں 29 فیصد کی کمی واقع ہوچکی ہے۔ 90 فیصد کمی پرندوں کے 12 خاندانوں میں ہوئی ہے۔ جن میں چڑیا اور چہکنے والے کئی چھوٹے پرندے شامل ہیں۔ دوسری جانب واٹر فاؤل اور ریپٹرز کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے جس کی وجہ ان کے لئے شروع کردہ تحفظاتی پروگرام ہیں۔ ماہرین کا خیال ہے کہ فوری طور پر اب دیگر پرندوں کو بچانے کے لئے بھی کوششیں کرنی ہوں گی۔

اس ٹیم نے نیکس راڈ نامی ریڈار نیٹ ورک سے بھی پورے براعظم کا جائزہ لیا ہے جس کی بدولت پرندوں کے بڑے بڑے غول کا جائزہ لیا جاتا ہے۔ اس سے نقل مکانی کرنے والے پرندوں کی تعداد کا پتہ بھی لگایا جاسکتا ہے اور گزشتہ 10 برس میں اس نے بھی خطرے کی گھنٹی بجاتے ہوئے پرندوں میں کمی کی خبر دی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔