سائبر فراڈ: 28 ہزار سے زیادہ فون بلاک، 20 لاکھ کنیکشنز کا ری ویریفیکیشن

وزارت داخلہ اور ریاستی پولیس کی ایک تحقیق میں معلوم ہوا کہ مختلف سائبر کرائمز میں 28200 موبائل ہینڈ سیٹوں کا غلط استعمال ہوا اور ان موبائل ہینڈ سیٹوں کے ساتھ 20 لاکھ نمبروں کا استعمال کیا گیا

سائبر کرائم / آئی اے این ایس
سائبر کرائم / آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: شہریوں کو ڈیجیٹل خطرات سے بچانے کی کوششوں میں محکمہ ٹیلی مواصلات (ڈی او ٹی) نے جمعہ کو کہا کہ اس نے ٹیلی مواصلات خدمات فراہم کرنے والوں (ٹی ایس پی) کو 28200 موبائل ہینڈ سیٹ کو بلاک کرنے اور متعلقہ 20 لاکھ کنیشنوں کی از سر نو تصدیق کی ہدایت جاری کی ہے۔

سائبر کرائم اور فنانشل دھوکہ دہی میں ٹیلی مواصلات کے وسائل کا غلط استعمال روکنے کے لئے ڈی او ٹی، وزارت داخلہ اور ریاستی پولیس نے معاہدہ کیا ہے۔

ڈی او ٹی نے ایک بیان میں کہا، ’’تعاون کے اس اقدام کا مقصد دھوکہ بازوں کے نیٹورک کو تباہ کرنا اور شہریوں کی ڈیجیٹل خطرات سے حفاظت کرنا ہے۔‘‘


وزارت داخلہ اور ریاستی پولیس کی ایک تحقیق میں معلوم ہوا کہ مختلف سائبر کرائمز میں 28200 موبائل ہینڈ سیٹوں کا غلط استعمال کیا گیا۔ ساتھ ہی، ان موبائل ہینڈ سیٹوں کے ساتھ 20 لاکھ نمبروں کا استعمال کیا گیا۔

اس کے بعد ڈی او ٹی نے ٹی ایس پی کو 28200 موبائل ہینڈ سیٹ بلاک کرنے اور ان موبائل ہینڈ سیٹس سے منسلک 20 لاکھ موبائل کنکشن منقطع کرنے کی ہدایات جاری کیں اگر وہ دوبارہ تصدیق کرنے میں ناکام رہتے ہیں۔

اس ہفتے کے شروع میں ڈی او ٹی نے ایک موبائل نمبر منقطع کر دیا اور کم از کم 20 منسلک موبائل آلات کو بلاک کر دیا جب ایک صارف نے اپنے ویب پورٹل 'چکشو' کے ذریعے سائبر فراڈ کی شکایت کی۔

چکشو ایک آن لائن سروس ہے جو شہریوں کو مشتبہ فراڈ کی اطلاع دینے کی اجازت دیتی ہے۔ ڈی او ٹی نے کہا کہ ’’مربوط نقطہ نظر عوامی تحفظ اور ٹیلی کمیونیکیشن انفراسٹرکچر کی سالمیت کے تحفظ اور ایک محفوظ ڈیجیٹل ماحول کو یقینی بنانے کے لیے مشترکہ عزم کو ظاہر کرتا ہے۔‘‘

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔