کورونا ویکسین کی فی خوراک 225 روپے کی ہوگی

بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاونڈیشن گلوبل الائنس فار ویکسین اینڈ امیونائیزیشن (گاوی)جو 15 کروڑ ڈالر کا ایک رسک فنڈ فراہم کرے گا۔

کورونا ویکسین
کورونا ویکسین
user

یو این آئی

پونے: دنیا کے سب سے بڑے ویکسین تیار کنندہ سیرم انسٹی ٹیوٹ پونے نے ہندوستان اور کم و درمیانہ آمدنی والے ممالک کی خاطر مجوزہ کورونا وائرس (کووڈ-19) ویکسین کے لیے فی خوراک 225 روپے زیادہ سے زیادہ قیمت متعین کی ہے۔

بل اینڈ میلنڈا گیٹس فاونڈیشن گلوبل الائنس فار ویکسین اینڈ امیونائیزیشن (گاوی)جو 15 کروڑ ڈالر کا ایک رسک فنڈ فراہم کرے گا۔ اس کا استعمال برطانیہ کے فرم کریجین کے اور امریکی بایوٹیک کمپنی نوواویکس کی ممکنہ ویکسین کی تیاری میں مدد کے لیے کیا جائے گا۔

قابل ذکر ہے کہ کووڈ-19 ٹیکوں کی ترقی میں رفتار لانے اور ان کی فوری اورجواز بخش رسائی یقینی بنانے کے لیے گاوی، کوالیشن فار ایپیڈیمک پریپیئرڈنیس انوویشن (سی ای پی آئی) اور عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے شریک قیادت میں تشکیل کوویکسین اتحاد کے تحت آنے والے 92 ممالک میں ہی ویکسین تقسیم کے لیے مذکورہ زیادہ سے زیادہ قیمت متعین کی گئی ہے۔

کمپنی نے جمعہ کو گاوی اور بل اینڈ میلنڈاگیٹس فاونڈیشن کے ساتھ ان ممالک کے لیے 10 کروڑ خوراک تک کی تیاری اور تقسیم میں رفتار لانے کے لیے ایک اشتراک قائم کیا۔ اس کے علاوہ سیرم انسٹی ٹیوٹ کے ساتھ ہوئے معاہدے کے مطابق ہندوستان کو ایسٹرا جینیکا سے ایک ارب خوراک کا 50 فیصد تک اور نووامیکس سے ایک بلین خوارک کا ایک حصہ حاصل ہونے کی امید ہے۔

سیرم انسٹی ٹیوٹ کے سی ای او ادار پوناوالا نے ایک بیان میں کہا کہ اشتراک کے ذریعہ کمپنی ہندوستان اور دیگر کم و درمیانہ آمدنی والے ممالک کے لیے معاہدہ کے حصے کی شکل میں سال 2021 کی پہلی ششماہی میں 10کروڑ خواراک کی تیاری اور تقسیم میں رفتار لائے گی۔

next