آن لائن ایپ سے لیا گیا قرض واپس نہ کر پانے پر لڑکی نے کی خودکشی

لڑکی نے مختلف موبائل ایپ کے ذریعہ 25000 روپئے کا قرض لیا تھا اور اس کو ادا کرنے سے قاصر تھی جس پر کمپنیاں اس کو ہراساں کر رہی تھیں۔ اس ہراسانی اور دباؤ کی وجہ سے اس نے یہ انتہائی اقدام کیا۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

حیدرآباد: ایک چونکا دینے والے واقعہ میں ایک نوجوان خاتون جس نے آن لائن ایپ کے ذریعہ قرض لیا تھا، رقم کی عدم ادائیگی نہ ہونے پر خودکشی کرلی۔ یہ واقعہ اے پی کے ضلع وشاکھاپٹنم میں پیش آیا۔ تفصیلات کے مطابق ضلع کے گجواکا علاقہ کی سندرئیا کالونی کی رہنے والی اہلادا نامی لڑکی ایم بی اے کی تکمیل کے بعد ملازمت کی تلاش کر رہی تھی۔

اس کا تعلق غریب خاندان سے تھا اور اس نے گھریلو اشیا کی خریداری کے لئے اپنی سہیلیوں سے رقم قرض کے طور پر لی۔ اس نے آن لائن کمپنیوں سے بھی قرض ایپ کے ذریعہ حاصل کیا، تاہم اس کا خاندان اس سے ناواقف تھا۔ گزشتہ روز جب اس کے والدین کام کے لئے گئے تھے تو اس نے کمرہ میں خود کو مقفل کر لیا۔ اس کی ماں نے جب اس کو فون کیا تو اس نے کوئی جواب نہیں دیا۔

جس کے بعد اس کے والدین نے اس کے بھائی کو فون کیا۔ اس نے کمرہ میں پنکھے سے اس کی لاش کو لٹکتا ہوا دیکھا اور اپنے والدین کو اس کی اطلاع دی۔ اس بات کی اطلاع پولیس کو دی گئی جس نے لاش کو پوسٹ مارٹم کے لئے بھیج دیا۔ پولیس کو ابتدائی جانچ میں پتہ چلا ہے کہ اس لڑکی نے مختلف موبائل ایپ کے ذریعہ 25000 روپئے قرض لیا تھا اور اس کو ادا کرنے سے قاصر تھی جس پر یہ کمپنیاں اس کو ہراساں کر رہی تھیں۔ اس ہراسانی اور دباو کی وجہ سے اس نے یہ انتہائی اقدام کیا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next