مشتاق صدف تاجکستان میں پی ایچ ڈی کے اولین ہندوستانی نگراں مقرر

تاجکستان میں ہندوستانی سفیرویراج سنگھ نے کہا ہے کہ اس فیصلے سے دونوں ملکوں کے درمیان تعلیمی، تہذیبی اور ثقافتی معاہدے کو مزید تقویت پہنچے گی۔

دائیں سے: سید زادہ اویس الدین، مشتاق صدف اور یونسی اہتم شاہ
دائیں سے: سید زادہ اویس الدین، مشتاق صدف اور یونسی اہتم شاہ
user

پریس ریلیز

تاجکستان: اردو کے معروف نقاد، شاعر اور تاجک نیشنل یونیورسٹی، دوشنبہ، تاجکستان میں ویزیٹنگ پروفیسر ڈاکٹر مشتاق صدف کو ان کی گراں قدرعلمی و ادبی اور تدریسی خدمات کو دیکھتے ہوۓ ایشین لینگویجیز آف دی اسٹیٹ انسٹی ٹیوٹ آف لینگویجیز آف تاجکستان نے اپنے دو اساتذہ کا پی ایچ ڈی کا نگراں اور ایڈوائزر مقرر کیا ہے۔ انسٹی ٹیوٹ آف لینگویجیز نے یہ فیصلہ تاجکستان میں ہندوستانی سفارت خانہ سے ملی تحریری اجازت کے بعد کیا ہے۔ تاجکستان میں پہلی بار کسی ہندوستانی استاد کو یہ اعزاز حاصل ہوا ہے۔

ڈاکٹر مشتاق صدف علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں اردو کے استاد ہیں اور اب وہ کچھ برسوں کے لیے ڈیپوٹیشن پر تاجک نیشنل یونیورسٹی میں وزیٹینگ پروفیسر کی حیثیت سے اپنی تدریسی خدمات انجام دے رہے ہیں۔ جن دو اساتذہ کے وہ نگراں اور ایڈوائزر مقرر کیے گئے ہیں ان میں جناب سید زادہ اویس الدین، صدر شعبہ ہندی کا پی ایچ ڈی کا موضوع "فیض احمد فیض اور جدید ہند و پاک ادب کے فروغ میں ان کی خدمات" ہے، جبکہ اہتم شاہ یونسی، صدر شعبہ فلولوجی کا تحقیقی و تنقیدی موضوع "برصغیر میں تہذیب و ثقافت کے فروغ میں تاجکی ( فارسی) کی خدمات اور مقام" ہے۔


تاجکستان میں ہندوستانی سفیر ویراج سنگھ نے کہا ہے کہ اس فیصلے سے دونوں ملکوں کے درمیان تعلیمی، تہذیبی اور ثقافتی معاہدے کو مزید تقویت پہنچے گی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔