’لڑکیوں میں تعلیم کا فروغ ضروری، اسے نظر انداز نہیں کیا جا سکتا‘

رابعہ گرلز پبلک اسکول میں سالانہ جلسہ تقسیم انعامات کا انعقاد۔ سنگم وِہار واقع ہمدرد پبلک اسکول کی منیجر ذکیہ صدیقی نے طالبات کا بڑھایا حوصلہ اور نیک خواہشات کا کیا اظہار۔

تصویر پریس ریلیز
تصویر پریس ریلیز

پریس ریلیز

’’لڑکیوں کے لیے حصول تعلیم انتہائی ضروری ہے کیونکہ ایسا کر کے ہی وہ اپنی قوم ، اپنے خاندان اور اپنے ملک کی ترقی میں اہم کردار ادا کر سکتی ہیں۔ تعلیم حاصل کر کے ہی لڑکیاں مختلف شعبہ ہائے زندگی میں اپنی اہمیت ظاہر کر سکتی ہیں۔‘‘ یہ نظریہ پروگرام میں مہمانِ خصوصی کی حیثیت سے شریک ذکیہ صدیقی نے رابعہ گرلز پبلک اسکول میں منعقد سالانہ جلسہ تقسیم انعامات کے دوران کیا۔ اس موقع پر سنگم وِہار واقع ہمدرد پبلک اسکول کی منیجر ذکیہ صدیقی نے طالبات کی حوصلہ افزائی کرتے ہوئے آئندہ زندگی میں ان کی کامیابی و کامرانی کی دعا بھی کی۔

’لڑکیوں میں تعلیم کا فروغ ضروری، اسے نظر انداز نہیں کیا جا سکتا‘

جلسہ تقسیم انعامات کا انعقاد 30 اپریل کو تلاوتِ کلام پاک سے شروع ہوا جس کا طالبات نے انگریزی ترجمہ بھی پیش کیا۔ اس کے بعد 19-2018 سیشن میں نمایاں کامیابی حاصل کرنے والی طالبات، صد فیصد حاضری والی طالبات، بہترین آرٹسٹ، بہترین کھلاڑی کے علاوہ مختلف زمروں میں اپنی بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی طالبات کو اعزاز سے نوازا گیا۔

’لڑکیوں میں تعلیم کا فروغ ضروری، اسے نظر انداز نہیں کیا جا سکتا‘

رابعہ گرلز پبلک اسکول کی جانب سے ہر سال دو طالبات کو آل راؤنڈر اسٹوڈنٹ کا اعزاز دیا جاتا ہے جس میں ایک طالبہ کا انتخاب درجہ 6 سے درجہ 8 میں کیا جاتا ہے اور دوسری طالبہ کا انتخاب درجہ 9 سے درجہ 12 کے درمیان کیا جاتا ہے۔ اس بار درجہ 6 سے درجہ 8 کی طالبات میں سے امیمہ بٹلا کو آل راؤنڈر اسٹوڈنٹ منتخب کیا گیا جب کہ درجہ 9 سے درجہ 12 کی طالبات میں لائبہ ممتاز کو آل راؤنڈر اسٹوڈنٹ قرار دیا گیا۔ امیمہ بٹلا کا تعلق درجہ 8 کے سیکشن اے سے ہے جب کہ لائبہ ممتاز کا تعلق درجہ 10 کے سیکشن اے 2 سے ہے۔

’لڑکیوں میں تعلیم کا فروغ ضروری، اسے نظر انداز نہیں کیا جا سکتا‘

تقریب کے دوران کئی دیگر انعامات بھی مختلف طالبات کے درمیان تقسیم کیے گئے اور اس سال کا بیسٹ ہاؤس ایوارڈ ’ذاکر ہاؤس‘ کو دیا گیا۔ پروگرام میں طالبات کے ساتھ ساتھ ان کے سرپرستوں کی موجودگی بھی خوب رہی اور وہ تقریب کے دوران بچیوں کی دل کھول کر حوصلہ افزائی کرتے ہوئے بھی نظر آئے۔

’لڑکیوں میں تعلیم کا فروغ ضروری، اسے نظر انداز نہیں کیا جا سکتا‘

اس موقع پر یاسمین نیازی (ہیڈ مسٹریس، ہمدرد پبلک اسکول، اوکھلا)، رانو مجومدار (ہیڈ مسٹریس، ہمدرد پبلک اسکول)، امیتا موہن (منیجر، سید حامد اکیڈمی)، رمّان حمید (اسپیشل ایجوکیٹر، مارجنز ٹومین اسٹریمز) مہمانِ ذی وقار کے طور پر موجود تھے۔ اسکول کی پرنسپل ڈاکٹر ناہید عثمانی نے تمام مہمانانِ کا استقبال کیا اور ثوبیہ حسن نے گلہائے عقیدت پیش کیے۔ تقریب کی نظامت کے فرائض قانطہ فاطمہ اور سحر پروین نے ادا کیے۔