پاکستان میں پٹرول-ڈیزل کے داموں میں 30 روپے کا اضافہ، عمران کی شہباز پر تنقید، ہندوستان کی تعریف

پاکستان کے سابق وزیر اعظم عمران خان نے پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں اضافے پر شہباز شریف حکومت پر کڑی تنقید کرتے ہوئے حکومت پاکستان کو بے حس قرار دیا

پاکستان میں پٹرول اور ڈیزل کے داموں میں بھاری اضافہ / Getty Images
پاکستان میں پٹرول اور ڈیزل کے داموں میں بھاری اضافہ / Getty Images
user

قومی آوازبیورو

اسلام آباد: پاکستان میں سیاسی اور معاشی بحران کے درمیان پٹرولیم مصنوعات کے داموں میں فی لیٹر 30 روپے کا اضافہ کر دیا گیا ہے۔ پاکستانی عوام کو اب پٹرول کے لیے 179.86 روپے فی لیٹر اور ڈیزل کے لیے 174.15 روپے فی لیٹر ادا کرنا ہوں گے۔ یٹرول اور ڈیزل کے داموں میں بے تحاشہ اضافے کے بعد سابق وزیراعظم پاکستان عمران خان نے شہباز شریف حکومت کا محاصرہ کرتے ہوئے حکومت کو بے حس قرار دیا۔

پاکستان کے سابق وزیر اعظم عمران خان نے پٹرول اور ڈیزل کے داموں میں 30 روپے فی لیٹر اضافے کے بعد شہباز شریف حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا۔ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ اس ’بے حس حکومت‘ نے پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے روس کے ساتھ 30 فیصد سستے تیل کے معاہدے کو آگے نہیں بڑھایا۔


اس کے ساتھ ہی عمران خان نے ایک بار پھر ہندوستان کی تعریف کی۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ کا اسٹریٹجک اتحادی روس سے سستا تیل خرید کر ایندھن کی قیمتوں کو کم کرنے میں کامیاب ہو گیا ہے۔ عمران خان نے ایک ٹوئٹ میں کہا کہ پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں 30 روپے فی لیٹر اضافے سے ملک کے عوام ’امپورٹڈ حکومت‘ کو غیر ملکی آقاؤں کے تابع کرنے کی قیمت ادا کر رہے ہیں۔

خیال رہے کہ پاکستان کے وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کے دوران قیمتوں کے حوالے سے اعلان کیا، جہاں ان کا کہنا تھا کہ حکومت کے پاس قیمتوں میں اضافے کے علاوہ کوئی آپشن نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں تنقید کا سامنا کرنا پڑے گا لیکن ملک کا مفاد ہمارے لیے اہم ہے اور اسے بچانا ہمارے لیے ضروری ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔