25 ارکان اسمبلی کی نااہلی حمزہ حکومت پر بھاری پڑے گی: فواد چودھری

فواد چودھری نے کہا کہ پنجاب کی حکومت ایک کمزور تار سے بندھی ہوئی ہے، جس کی ذمہ داری کوئی لینے کو تیار نہیں ہے۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

پاکستان تحریک انصاف کے سینئر نائب صدر چودھری فواد حسین نے کہا ہے کہ 25 ارکان اسمبلی کی نااہلی صوبہ پنجاب میں حمزہ شہباز کی حکومت پر یقیناً بھاری پڑے گی۔

مسٹر فواد چودھری نے کہا کہ یہاں کی حکومت ایک کمزور تار سے بندھی ہوئی ہے، جس کی ذمہ داری کوئی لینے کو تیار نہیں ہے۔


انہوں نے کہا کہ’’ 25 ارکان اسمبلی کی نااہلی سے پنجاب اسمبلی میں کسی کے پاس 186 ارکان نہیں ہوں گے۔ ایسے میں اگر الیکشن کمیشن 90 دنوں میں انتخابات نہیں کرواتا ہے تو ان کو گھر لوٹ جانا چاہئے۔‘‘
مسٹر چودھری نے کہا کہ اس کی بنیادی وجہ ٹرن کوٹ (دل بدل) سے متعلق دو معاملے ہیں اور پنجاب اسمبلی میں 25 ارکان کے پارٹی بدلنے کا معاملہ ہے۔ اور اس کی وجہ سے نہ تو گورنر اس نام نہاد ریاستی حکومت اور نہ ہی اسپیکر پنجاب قانون ساز اسمبلی کو تسلیم کرنے کو تیار ہیں۔

نہوں نے یاد دلایا کہ عدالتی فیصلے کے مطابق پنجاب اسمبلی میں حمزہ شریف کو حلف دلاتے ہوئے کہا کہ یہ ریاستی حکومت ایک عارضی بندوبست ہے۔ الیکشن کمیشن آف پاکستان ان کی قسمت کے بارے میں اپنا فیصلہ سنائے گا کیونکہ آئین کے آرٹیکل 63 اے کے تحت اس معاملے میں رکن اسمبلی اور رکن پارلیمنٹ کے درمیان یقینی طور پر فرق ہے۔ تاہم اس معاملے میں پی ٹی آئی کے ناراض ممبران پارلیمنٹ نے بڑی بے شرمی سے الیکشن کمیشن کے سامنے اپنے حلف نامے جمع کرائے ہیں اور کہا ہے کہ وہ پارٹی کا حصہ ہیں اور مسٹر عمران خان کی قیادت میں یقین رکھتے ہیں۔ اس طرح ان کا خیال تھا کہ وہ نااہلی سے بچ جائیں گے، لیکن ایسا نہیں ہوگا ۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔