عمران کی پارٹی کے ارکان دے سکتے ہیں اجتماعی استعفے، شہباز کا انتخاب دوپہر 2 بجے

پی ٹی آئی کی کور کمیٹی نے عمران کو مشورہ دیا ہے کہ پی ٹی آئی کو قومی اسمبلی کے ساتھ ساتھ اسمبلیوں سے بھی استعفیٰ دے دینا چاہیے۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

پاکستانی سیاست میں روز نیا موڑ دیکھنے کو مل رہا ہے۔ اب خبر یہ ہے کہ سابق وزیر اعظم عمران خان کی پارٹی کے تمام ارکان اجتماعی استعفی دے سکتے ہیں۔

پاکستان کے سابق وزیر اطلاعات اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سینئر رہنما فواد چوہدری نے اتوار کو اعلان کیا کہ پارٹی کے اراکین قومی اسمبلی سے پیر کو اجتماعی طور پر مستعفی ہو جائیں گے۔


پاکستانی اخبار ڈان کی رپورٹ کے مطابق مستعفی ہونے کا فیصلہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف کے وزارت عظمیٰ کے انتخاب کے لیے کاغذات نامزدگی کی منظوری کے پیش نظر کیا گیا ہے۔ پی ٹی آئی نے مسٹر شریف پر اعتراضات اٹھائے تھے جسے قومی اسمبلی سیکرٹریٹ نے مسترد کر دیا اور شہباز شریف کی نامزدگی قبول کر لی۔

فواد چودھری نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کے سابق وزیر اعظم عمران خان کے ساتھ پی ٹی آئی کی سینٹرل کور ایگزیکٹو کمیٹی کی میٹنگ بنی گالہ میں ہوئی اور وہاں ’’پوری صورتحال کا تجزیہ کیا گیا‘‘۔


کمیٹی نے عمران کو مشورہ دیا کہ پی ٹی آئی کو قومی اسمبلی کے ساتھ ساتھ اسمبلیوں سے بھی استعفیٰ دے دینا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ اگر شہباز شریف کے خطوط پر ہمارا اعتراض دور نہ ہوئے تو ہم کل استعفیٰ دے دیں گے۔

قابل ذکر ہے کہ پاکستان میں نئے وزیر اعظم کے انتخاب کے لیے قومی اسمبلی کا اجلاس پیر کی دوپہر 2 بجے ہوگا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔