پاکستان: عمران حکومت نے بدھ کو پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس طلب کیا

الٰہی کی زیر صدارت مسلم لیگ (ق) کی پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں تمام اراکین نے کہا کہ عام لوگ مہنگائی کا شکار ہیں اور عوامی نمائندوں کو اپنے علاقوں میں عوام کی مخالفت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

عمران خان، تصویر آئی اے این ایس
عمران خان، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

اسلام آباد: پاکستان میں عمران خان کی قیادت والی حکومت نے بدھ کو پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس بلایا ہے اور حکومت الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم)، قومی احتساب بیورو (نیب) اور دیگر بل کے مسئلے پر اپنے اتحادیوں پاکستان مسلم لیگ (کیو) (پی اے ایم-کیو) اور متحدہ قومی مومنٹ-پاکستان (ایم کیو ایم-پی) کی حمایت حاصل کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ ان سبھی بل کو ایوان میں پیش کیا جائے گا۔

جیو ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کے دوران ای وی ایم اور بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو ووٹ کا حق دینے سمیت کم از کم 10 بل پیش کیے جائیں گے۔ قابل ذکر ہے کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی قیادت والی مخلوط حکومت کے ایک اہم اتحادی نے پیر کو بڑھتی ہوئی مہنگائی پر تشویش کا اظہار کیا تھا۔


جیو ٹی وی نے اپنی رپورٹ میں پاکستان مسلم لیگ (قائداعظم) مسلم لیگ (ق) کے سینئر رہنما اور پنجاب اسمبلی کے اسپیکر چودھری پرویز الٰہی نے کہا کہ انھیں اب پی ٹی آئی حکومت کی بطور اتحادی حمایت کرنا مشکل ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عمران حکومت عوام کے دکھوں کا مداوا کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے اور افسوس کی بات ہے کہ وہ نان ایشوز کو سنگین ایشو بنا کر عوام کے زخموں پر نمک چھڑک رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر حکومت فوری طور پر عام لوگوں کو راحت نہیں پہنچاتی ہے تو صورتحال مزید خراب ہو جائے گی۔ انہوں نے عہدیداروں سے اس مسئلے کا حل نکالنے کے لیے سنجیدگی کا مظاہرہ کرنے کی درخواست کی۔

دریں اثناء پرویز الٰہی کی زیر صدارت مسلم لیگ (ق) کی پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں تمام اراکین نے کہا کہ عام لوگ مہنگائی کا شکار ہیں اور عوامی نمائندوں کو اپنے علاقوں میں عوام کی مخالفت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایسی صورتحال میں مخلوط حکومت کی حمایت جاری رکھنا مشکل ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔