پاکستان نے بھی چین کو دیا جھٹکا، ’بیگو‘ ایپ پر لگائی پابندی

پاکستان حکومت کی جانب سے جاری شکایت میں کہا گیا ہے کہ ٹک ٹاک اور بیگو کے بارے میں سماج کے مختلف طبقوں سے شکایت ملی تھی۔ بیگو ایپ فحش اور غیر مہذب مواد دکھانے کا ذریعہ بن گیا ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

کراچی: عمران خان حکومت نے اپنے ’سدابہار دوست‘ چین کو زبردست جھٹکا دیتے ہوئے بیگو ایپ پر پابندی عائد کرنے کے ساتھ ہی ٹک ٹاک کو بھی آخری وارننگ دے دی ہے۔ پاکستان مواصلاتی اتھارٹی (پی ٹی اے)کی طرف سے پیر کی دیر رات جاری بیان میں بیگو ایپ کی لائیو اسٹریمنگ پر پابندی لگانے کے ساتھ ٹک ٹاک کو ’آخری وارننگ ‘ دی گئی۔دراصل پاکستان نے فحش اور غیر مہذب مواد دکھانے کی وجہ سے بیگو ایپ کو بند کیا ہے۔اس سے پہلے پاکستان نے گیمنگ ایپ پب جی پر بھی پابندی عائد کر دی تھی۔

لاہور ہائی کورٹ میں پچھلے ہفتے ایک عرضی دائر کر کے ٹک ٹاک پرفوری پابندی لگانے کی اپیل کی گئی تھی۔عرضی گزاروں نے کہا تھا کہ یہ ایپ جدید دور میں بہت بڑی برائی ہے۔انہوں نے کہا کہ ٹک ٹاک سوشل میڈیا پر شہرت اور ریٹنگ کے لالچ میں پورنو گرافی کا بڑا ذریعہ بن گیا ہے۔پاکستان حکومت کی جانب سے جاری شکایت میں کہا گیا ہے کہ ٹک ٹاک اور بیگو کے بارے میں سماج کے مختلف طبقوں سے شکایت ملی تھی۔

حکومت کی طرف سے کہا گیا ہے کہ دونوں ہی ایپ کی جانب سے آیا جواب اطمینان بخش نہیں ہے۔اس کے بعد حکومت نے بیگو کو بین کردیا اور ٹک ٹاک کو آخری وارننگ دی گئی ہے۔اس سے پہلے عمران خان حکومت نے آن لائن ملٹی پلیئر گیم پب جی پر پابندی لگانے کا اعلان کیا تھا۔حکومت نے اس گیم کو اسلام مخالف بتاتے ہوئے کہا تھا کہ نوجوانوں کو اس گیم کی لت لگ جاتی ہے۔

Published: 21 Jul 2020, 2:11 PM
next