پاکستان میں کورونا کے ٹیکے فروخت کرنے والا فرضی ڈاکٹر گرفتار

کراچی کے علاقے ڈیفنس میں پولیس نے ایسے شخص کو گرفتار کیا ہے جو خود کو ڈاکٹر ظاہر کر کے کورونا وائرس کی جعلی ویکسین فروخت کر رہا تھا

پاکستان میں ٹیکہ کاری کی علامتی تصویر / Getty Images
پاکستان میں ٹیکہ کاری کی علامتی تصویر / Getty Images
user

قومی آوازبیورو

کراچی: پاکستان کے کراچی شہر میں ایک کلینک پر غیر قانونی طریقے سے کووڈ- 19 کے ٹیکے فروخت کرنے کا معاملہ سامنے آیا ہے، اس سلسلے میں پولس نے ایک شخص کو گرفتار کیا ہے۔ پاکستانی اخبار ڈان کی رپورٹ کے مطابق کراچی کے علاقے ڈیفنس میں پولیس نے ایسے شخص کو گرفتار کیا ہے جو خود کو ڈاکٹر ظاہر کر کے کورونا وائرس کی جعلی ویکسین فروخت کر رہا تھا۔

رپورٹ کے مطابق پولیس کے ایک عہدیدار عمران مرزا نے کہا کہ ’’ڈیفنس پولیس نے سید دیدار علی نامی ایک جعلی ڈاکٹر کو گرفتار کیا ہے، جو ایک کلینک میں کورونا وائرس کی جعلی ویکسین فروخت کر رہا تھا۔‘‘ پولیس نے مشتبہ شخص کے خلاف تعزیرات پاکستان کی دفعات 419 (بھیس بدل کر دھوکا دینے) اور 420 (فریب) کے تحت مقدمہ درج کر لیا۔


پولس حکام نے بتایا کہ اس معاملے میں گرفتار ملزم سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے اور یہ معلوم کیا جا رہا ہے کہ اس نے ویکسین کی خوراکیں کس طرح حاصل کیں۔ اس کے علاوہ یہ بھی معلوم کیا جا رہا ہے کہ لوگوں کو جو ویکسین غیر قانونی طور پر دی جا رہی تھی وہ اصلی ہے یا نقلی!

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔