پاکستان میں ڈینگو کا قہر جاری، 66 افراد کی موت

سندھ میں ڈینگی سے کم از کم 26افراد کی موت ہوئی ہے، اسلام آباد میں 22، پنجاب میں 14، بلوچستان میں تین اور ایک دیگر علاقے میں یہ اموات ہوئی ہیں۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا

یو این آئی

اسلام آباد: پاکستان میں اس سال ابھی تک ڈینگی میں 44 ہزار سے زیادہ لوگ مبتلا ہوئے ہیں جن میں سے 66 لوگوں کی موت ہوچکی ہے۔ اس سے پہلے سال 2011 میں پاکستان میں ڈینگی کے 27 ہزار معاملے ریکارڈ کیے گئے تھے لیکن اس بیماری سے مرنے والوں کی تعداد 370 تھی جو حالیہ تعداد سے تقریباً چھ گنا زیادہ تھی۔

نیشنل انسٹی ٹیوٹ آٖف ہیلتھ کے امراض کی نگرانی کے شعبہ کے سربراہ ڈاکٹر رانا صفدر نے روزنامہ ڈان کو ایک اطلاع میں بتایا کہ اس سال دنیا بھر میں ڈینگی کے معاملوں کی بے حد تشویش ناک تعداد درج ہوئی ہے۔ انہوں نے دعوی کیا کہ پاکستان میں دیگر ملکوں کے مقابلے بہت زیادہ بہتری ہوئی ہے۔

ڈاکٹر صفدر نے بتایا کہ اس سال ڈینگی کی زد میں 44 ہزار افراد آئے ہیں اور اس بیماری سے اب تک 66 لوگوں کی جان جاچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کے زیادہ ترعلاقوں میں ڈینگی مچھر کے پیدا ہونے کا موسم تقریباً ختم ہوچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کراچی ملک کا واحد شہر ہے جہاں سندھ سے نہ صرف 94 فیصد معاملے سامنے آئے ہیں بلکہ رواں مالی سال کے آخر تک ڈینگی کے معاملوں کا تسلسل برقرار رہنے کا خدشہ ہے۔

حالیہ سال میں مہیا اعداد و شمار کے مطابق ملک میں ڈینگی کے کل اب تک 44415 معاملے سامنے آچکے ہیں۔ اس میں اسلام آباد سے 12433 معاملے، سندھ سے 10142، پنجاب سے 9260، خیبر پختونخوا سے 7346 اور بلوچستان سے 3051 معاملے سامنے آئے ہیں۔ اس کے علاوہ 3383 معاملے دیگر علاقوں سے آئے ہیں۔ سندھ میں ڈینگی سے کم از کم 26افراد کی موت ہوئی ہے، اسلام آباد میں 22، پنجاب میں 14، بلوچستان میں تین اور ایک دیگر علاقے میں یہ اموات ہوئی ہیں۔

Published: 6 Nov 2019, 12:44 PM