پاکستان کی قومی اسمبلی کے سابق ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری پر حملہ

پاکستان کی نیشنل اسمبلی کے سابق ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری پر قومی دارالحکومت اسلام آباد کے ایک نجی ہوٹل میں ہاتھاپائی کی گئی

قاسم سوری / ویڈیو گریب
قاسم سوری / ویڈیو گریب
user

یو این آئی

اسلام آباد: پاکستان کی نیشنل اسمبلی کے سابق ڈپٹی اسپیکر قاسم سوری پر قومی دارالحکومت اسلام آباد کے ایک نجی ہوٹل میں ہاتھاپائی کی گئی۔ اے آر وائی نیوز نے قاسم سوری کے حوالے سے بتایا کہ وہ آج صبح سحری کے لیے کوہسار مارکیٹ کے ایک ہوٹل پہنچے تو ان پر پاکستان مسلم لیگ نواز (پی ایم ایل این) کے کارکنان اور مرکزی وزیر نارکوٹکس کنٹرول شاہ زین بگٹی کے گارڈز نے حملہ کیا۔

پولیس کے مطابق قاسم سوری اپنے دوستوں کے ساتھ ہوٹل میں موجود تھے کہ لوگوں کا ایک ہجوام آیا اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما کے خلاف نعرے بازی شروع کردی اور ہاتھا پائی بھی کی۔ اس دوران قاسم سوری کو کوئی چوٹ نہیں آئی لیکن ان کے دوست کو معمولی چوٹیں آئی ہیں۔


اے آر وائی نیوز نے رپورٹ کیا کہ یہ واقعہ سعودی عرب کی مسجد نبوی میں لوگوں کے ایک ہجوم کی جانب سے وزیر اعظم شہباز شریف کے وفد کے خلاف نعرے لگانے اور جمہوری وطن پارٹی (جے ڈبلیو پی) کے سربراہ شاہ زین بگٹی کے ساتھ بدتمیزی کے بعد پیش آیا۔ واقعے کے فوراً بعد، قاسم سوری نے جے ڈبلیو پی کے کارکنان کے خلاف ایف آئی آر درج کرائی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔