مائک پینس یا تو ٹرمپ کو آج ہٹائیں نہیں تو کل ہوگی مواخذے کی تحریک پر ووٹنگ

نائب صدر نےٹرمپ کو صدارت کے عہدے سے ہٹانے کے لئے اگر آج 25 ویں ترمیم لاگو نہیں کی تو کل یعنی بدھ کے روز ٹرمپ کے خلاف مواخذے کی تحریک پر ووٹنگ ہو گی۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

سید خرم رضا

نو منتخب صدر جو بائیڈن کی حلف برداری سے پہلے امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کو صدر کے عہدے سے ہٹانے کی تیاری شروع ہو گئی ہے۔ 6 جنوری کو امریکی دارالحکومت واشنگٹن ڈی سی میں واقع کیپیٹل ہل یعنی امریکی پارلیمنٹ میں ٹرمپ حامیوں نے جو تشدد کیا اس کے بعد سے ٹرمپ کو صدر کےعہدے سے ہٹانے کا مطالبہ زوروں پر ہے۔

واضح رہے امریکی ایوان نے نائب صدر مائک پینس سےکہا ہے کہ وہ منگل کے روز یعنی آج صدر ٹرمپ کو ہٹانے کے لئے 25 ویں ترمیم لاگو کریں اور اگر ایسا نہیں ہوا تو پھر ایوان میں کل یعنی بدھ کے روز ٹرمپ کے خلاف مواخذے کی تحریک پر ووٹنگ ہوگی۔

کیپیٹل ہل میں ہوئے تشدد کے واقعہ کے بعد ٹرمپ اپنی ہی پارٹی میں تنہا ہوتے جا رہے ہیں کیونکہ خود رپبلیکن ارکان اب ٹرمپ کو ہٹانے کا مطالبہ کر رہے ہیں ۔ ٹرمپ کا ان تشدد کرنے والوں کے تعلق سے دیا گیا بیان کہ ’لو یو، یو آر اسپیشل‘ یعنی وہ بہت خاص لوگ ہیں اور وہ ان سے پیار کرتے ہیں، ان کے خلاف جا رہا ہے اور عوام بھی اس بات پر یقین کر رہی ہے کہ ٹرمپ نے تشدد کے لئے اکسایا ہے۔

واضح رہے اگر ٹرمپ کو صدر کے عہدے سے ہٹا دیا گیا تو وہ بائیڈن کی حلف برداری کی تقریب میں شرکت نہیں کر پائیں گے۔ ویسے بھی ٹرمپ یہ کہہ چکے ہیں کہ وہ حلف برداری کی تقریب میں شرکت نہیں کریں گے۔ صدر کا نئے صدر کی حلف برداری کی تقریب میں شریک نہ ہونا ایک غلط پیغام دیتا ہے لیکن صدر ٹرمپ کے خلاف ناراضگی بڑھتی ہی جا رہی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 12 Jan 2021, 8:11 AM
next