ٹرمپ کا دعوی، ایرانی قیادت ملنا چاہتی ہے

کیاایران اور امریکہ کے تعلقات میں ایک واضح تبدیلی نظر آ رہی ہے ، اگر ایسا ہے تو عالمی امن کے لئے یہ ایک اچھا پہلو ہے

سوشل میڈیا
سوشل میڈیا

قومی آوازبیورو

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا ہے کہ انہیں لگتا ہے کی ایرانی قیادت ملاقات کی خواہاں ہے۔ اس بیان کے بعد اس امر کی توقع بڑھ گئی ہے کہ وہ اقوام متحدہ اسمبلی کے پیش آئند سمٹ کے موقع پر اپنے ایرانی ہم منصب سے ملنے کی کوئی سبیل نکالنے والے ہیں۔

وائٹ ہاؤس میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ ’’میں آپ کو بتاتا چلوں کہ ایران، امریکی قیادت سے ملنے کی خواہش مند ہے۔‘‘

ڈونلڈ ٹرمپ متعدد بار اس امر کی جانب اشارہ کر چکے ہیں کہ وہ صدر حسن روحانی سے ملنے کو تیار ہیں۔ صدر روحانی اس مہینے کے آخری عشرے کے دوران ہونے والی یو این جنرل اسمبلی کے اجلاس میں شریک ہوں گے۔

بدھ کے روز ایرانی صدر نے تہران پر دباؤ ڈالنے کی امریکی پالیسی پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ امریکیوں کو جان لینا چاہئے جنگی جنون امریکا کے مفاد میں نہیں ہے۔ امریکا کو اسے چھوڑنا ہو گا۔

امسال مئی ہے تہران اور امریکا کے درمیان تعلقات کشیدہ چلے آ رہے ہیں کیونکہ واشنگٹن نے 2015 میں عالمی طاقتوں کے ایران سے طے پانے والے جوہری معاہدے سے یک طرفہ طور پر نکلنے کا اعلان کیا تھا، جس کے بعد تہران پر امریکی پابندیوں کا نہ ختم ہونے والا سلسلہ شروع ہوا، جو تادم تحریر جاری ہے۔

ایران نے بھی جوہری معاہدے سے متعلق اپنے حصے کی ذمہ داریاں ادا کرنے سے معذرت کر لی ہے، تاہم بعض تجزیہ کاروں کو امید ہے کہ رواں ہفتہ امریکی قومی سلامتی کے مشیر جان بولٹن کی برخاستگی کے بعد اس محاذ پر کسی سمجھوتے کی پیش رفت ہو جائے۔