خالدہ ضیاء کو سلو پوائزن دیا جا رہا ہے: فخرالاسلام

دعوی ہے کہ بیگم خالدہ ضیاء جو کہ ایور کیئر ہسپتال، ڈھاکہ کے سی سی یو میں زیر علاج ہیں، شدید علیل ہیں اور ڈاکٹروں نے ہاتھ کھڑے کردیے ہیں۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

بنگلہ دیش نیشنلسٹ پارٹی (بی این پی) کے جنرل سکریٹری مرزا فخر الاسلام عالمگیر نے بنگلہ دیش کی سابق وزیر اعظم اور پارٹی کی صدر بیگم خالدہ ضیا کے قتل کے بارے میں خدشہ ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ انہیں سلو پوائزن دیا جا رہا ہے۔

مسٹر عالمگیر نے کہا کہ موجودہ حکومت کے لیے کچھ بھی ناممکن نہیں، جو لوگوں کو مار کر بہت آسانی سے غائب کر سکتی ہے۔


پارٹی کے جنرل سکریٹری نے کہاکہ محترمہ خالدہ ضیا کو ڈھاکہ کی جیل میں تقریباً دو سال تک رکھا گیا۔ بعد میں جب ان کی طبیعت بگڑ گئی تو انہیں ملک کے دارالحکومت کے پی جی (بی ایس ایم ایم یو) اسپتال لے جایا گیا، لیکن وہاں ان کا علاج نہیں ہوا۔ چونکہ جیل میں قیام کے دوران وہ بیمار پڑ ی تھیں، اس لیے سب کے ذہن میں یہ سوال تھا کہ کیا انہیں سلو پوائزن دے کر مارنے کی کوشش کی جارہی ہے؟

انہوں نے یہ تبصرے جمعرات (25 نومبر) کو نیشنل پریس کلب کے سامنے نیشنلسٹ یوتھ پارٹی کے ایک جلسے میں کیے جس میں خالدہ ضیا کی رہائی اور بیرون ملک بہتر علاج کا مطالبہ کیا گیا۔ پارٹی کے دیگر بڑے رہنماؤں کے علاوہ ڈھاکہ میٹروپولیٹن شمالی اور جنوبی کے رہنماؤں اور کارکنوں نے بھی ریلی میں شرکت کی۔


مسٹر عالمگیر نے کہا کہ بیگم خالدہ ضیاء جو کہ ایور کیئر ہسپتال، ڈھاکہ کے سی سی یو میں زیر علاج ہیں، شدید علیل ہیں۔ یہاں کے ڈاکٹروں نے ہاتھ کھڑے کردیے ہیں اور کہا ہے کہ ملک میں اس سے زیادہ کچھ نہیں ہو سکتا۔ ان کے ڈاکٹروں نے واضح طور پر کہا ہے کہ انہیں بہتر علاج کے لیے فوری طور پر بیرون ملک لے جانے کی ضرورت ہے لیکن وزیر اعظم یہ بات سننا ہی نہیں چاہتیں۔ ان کے وزراء اور عوامی لیگ کے متعدد ارکان پارلیمنٹ کابھی یہ کہنا ہے کہ بیگم ضیاء کو علاج کے لیے بیرون ملک جانے کی اجازت دی جائے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔