’اومیکرون‘ سے امریکہ میں بھی دہشت، نئے کیسز کے درمیان سفری ضابطے سخت

امریکی صدر جو بائڈن نے سخت کووڈ-19 سفری ضابطوں کو نافذ کیا ہے، کیونکہ امریکہ میں اومیکرون ویریئنٹ کے کچھ معاملوں کی تصدیق ہوئی ہے۔

کورونا وائرس، تصویر یو این آئی
کورونا وائرس، تصویر یو این آئی
user

قومی آوازبیورو

دنیا کے کئی ممالک میں کورونا کے ’اومیکرون‘ ویریئنٹ کی دہشت دیکھنے کو مل رہی ہے۔ امریکی صدر جو بائڈن نے بھی ملک میں سخت کووڈ-19 ضابطوں کو نافذ کرنے کا اعلان کیا ہے۔ ایسا انھوں نے تب کیا جب امریکہ میں اومیکرون ویریئنٹ ے کچھ معاملوں کی تصدیق ہوئی ہے۔ بی بی سی نے جمعہ کو بتایا کہ بائڈن کا کہنا ہے کہ ان کے منصوبے میں ’شٹ ڈاؤن یا لاک ڈاؤن شامل نہیں ہے۔‘‘

کیلیفورنیا، کولوراڈو، منیسوٹا، نیویارک اور ہوائی میں نئے ویریئنٹ کے معاملوں کا پتہ چلا ہے جہاں افسران کا کہنا ہے کہ اس شخص نے حال میں کوئی سفر نہیں کیا تھا۔ ریاست کے طبی افسران نے ان معاملوں میں صرف ہلکی علامات کی اطلاع دی ہے۔ رپورٹس کے مطابق یہ نیا ویریئنٹ اب 30 ممالک میں پھیل چکا ہے۔


جمعرات کو امریکہ میں نئے ضابطے نافذ کیے گئے ہیں۔ اس کے تحت سبھی بین الاقوامی مسافروں کو ان کی ٹیکہ کاری کی حالت کی پرواہ کیے بغیر امریکہ کے لیے روانہ ہونے سے 24 گھنٹے پہلے وائرس کے لیے ٹیسٹنگ کرنا ہوگا۔ طیاروں، ٹرینوں اور بسوں میں ماسک کی لازمیت کو مارچ تک بڑھایا جائے گا۔

سردیوں کے مہینوں کے لیے انتظامیہ کے منصوبہ میں سبھی بالغوں کو اپنے بوسٹر ٹیکے حاصل کرنے کے لیے ترغیب دینے کے لیے اقدام بھی شامل ہیں، جس میں ایک عوامی بیداری مہم اور زیادہ ہدف تک رسائی شامل ہے۔ 40 ملین سے زیادہ امریکیوں نے اپنے بوسٹر شاٹ حاصل کیے ہیں، لیکن بائڈن نے کہا کہ تقریباً 100 ملین سے زیادہ لوگ اس کے اہل ہیں اور ابھی تک انھوں نے اپنا بوسٹر شاٹ نہیں لیا ہے۔


بچوں اور جوانوں میں ٹیکہ کاری شرح بڑھانے کی کوششوں میں ملک بھر میں سینکڑوں کنبہ ٹیکہ کاری کلینک قائم کیے گئے ہیں۔ امریکہ اور کئی دیگر ممالک نے آٹھ جنوبی افریقی ممالک سے سفر پر پابندی لگا دی ہے۔ طبی ماہرین نے کہا ہے کہ سفری پابندیوں سے انھیں نئے ویریئنٹ کا مطالعہ کرنے کا وقت مل جائے گا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔